بھارتی حکومت کا بھارتی لڑکی کیساتھ پسند کی شادی کرنیوالے پاکستانی نوجوان کو واپس بھیجنے کا حکم

بھارتی حکومت کا بھارتی لڑکی کیساتھ پسند کی شادی کرنیوالے پاکستانی نوجوان کو ...

لاہور، نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی حکومت نے بھارتی لڑکی کیساتھ پسند کی شادی کرنے والے پاکستانی لڑکے کو جیل کی ہواکھلانے کے بعد درخواست کے باوجود ویزے میں توسیع دینے کی بجائے ’سزا‘ دینے کے بعد ڈی پورٹ کرکے اپنے ملک واپس بھیجنے کا فیصلہ کرلیا۔ سیاحتی ویزے کی مدت ختم ہونے پر طویل المدت ویزے کیلئے درخواست دینے والے اکبر درانی کو قید کی سزا بھی کاٹنا پڑی ۔حیدرآباد کے 31 سالہ پاکستانی اکبر درانی اور مدھیاپردیش کی صوفیہ کی دوستی 2011ء میں انٹرنیٹ پر ہوئی جو محبت میں بدلی اور پھر 2013 ءمیں اکبر درانی نے بھارت جا کر صوفیہ سے شادی کرلی، جوڑے کے ہاں ایک بچہ ہوا۔

سیاحتی ویزے پربھارت جانیوالے درانی نے لانگ ٹرم ویزا کیلئے رجوع کیا تواسے ہدایت کی گئی کہ درخواست دیں، ویزہ کی مدت ختم ہونے سے دوماہ قبل متعلقہ دفتر رابطہ کیا اور بھارتی لڑکی کیساتھ شادی کو بنیاد بنائی تاہم یہ تمام مشق رائیگاں گئی کیونکہ ویزے کے خاتمے کے دن جب وہ دوبارہ اپنے ویزے سے متعلق پتہ کرنے متعلقہ دفتر گئے تووہاں زائد معیاد قیام کرنے کے الزام میں گرفتار کرکے جیل میں ڈال دیا گیااور عدالت نے آٹھ اگست 2015 ءکو ایک سال قید کی سزاسنادی، اب اسے ڈی پورٹ کرنے کا حکم دیدیا۔آٹھ اگست 2016ءکو جیل سے رہائی مل گئی جس پر اس نے پاکستانی ہائی کمیشن کی طرف سے جاری ہونیوالی دستاویزات کیلئے پولیس سے رابطہ کیا لیکن اس کیلئے بھی چھ ماہ سے زائد عرصہ لگ گیاتاہم بیوی اور بچے کو ساتھ پاکستان جانے کی اجازت نہیں مل سکی ۔

ہندوستان ٹائمز کے مطابق آنکھوں میں آنسو لیے درانی نے بتایاکہ 2011ءمیں فیس بک اور سکائپ کے ذریعے اس کا دیواس کی صوفیہ سے رابطہ ہوااور پھر انڈیا آنے پر مجبور ہوگیا، میں نے اپنے بھائی کے ہمراہ ویزا لیا اور دیواس چلاگیا، صوفیہ کے والدین سے ملا جو شادی کے بعد بھی بھارت میں رہنے کی شرط پر رشتہ کیلئے رضامند ہوگئے، 2013ءمیں شادی ہوگئی اور پھر ایک سال بعد ہی ایک بچہ ہوا،مجھے خدا حافظ کہنے میرے ساتھ بیوی بچہ بھی امرتسرآئیں گے لیکن سب سے افسوسناک بات یہ ہے کہ مجھ پر ویزاقوانین کی خلاف ورزی کا الزام لگایاگیا اور اب میں دوبارہ کبھی بھارت نہیں آسکوں گااور ابھی یہ بھی معلوم نہیں کہ پاکستانی ہائی کمیشن بھی اس کے بیوی بچوں کیلئے پاکستانی ویزا جاری کرے گا یا نہیں، درانی کاکہناتھاکہ میں نے کبھی سوچا بھی نہیں تھا کہ بھارت میں قیام پذیر ہونے کے بعد مجھے اس طرح زبردستی اپنی فیملی سے جد اکردیاجائے گا، یہ میری زندگی کا سونامی ہے۔ اکنامکس میں ایم اے پاس درانی نے معاشی مسائل سے نمٹنے کے لیے مدھیہ پردیش کے ایک سکول میں پڑھاناشروع کردیا۔

مزید : بین الاقوامی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...