سعودی وزیرخارجہ کے دورہ کے شیڈول میں تبدیلی، اتوار کو آمد لیکن اپنے ساتھ کیا لارہے ہیں؟ خبرآگئی

سعودی وزیرخارجہ کے دورہ کے شیڈول میں تبدیلی، اتوار کو آمد لیکن اپنے ساتھ ...
سعودی وزیرخارجہ کے دورہ کے شیڈول میں تبدیلی، اتوار کو آمد لیکن اپنے ساتھ کیا لارہے ہیں؟ خبرآگئی

  


اسلام آباد ، لاہور (ویب ڈیسک) سعودی وزیرخارجہ عادل الجبیر کے دورہ پاکستان کے پروگرام میں ردوبدل، سعودی وزیر خارجہ  اب اتوار کو پاکستان آ ئیں گے جس کی تصدیق وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے بھی کردی۔

سفارتی ذرائع کے مطابق سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر  کی جمعہ کو  پاکستان  آمد متوقع تھی لیکن ان کے دورے کے شیڈول میں تبدیلی کی گئی ہے، اب سعودی وزیر خارجہ پہلے آج بھارت کا دورہ کرسکتے ہیں تاہم اس کی تصدیق نہیں ہوسکی، اتوار کو عادل الجبیر  پاکستان آئیں گے ۔سعودی وزیر خارجہ دورہ پاکستان میں ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا خصوصی پیغام بھی لائیں گے، عادل الجبیر کے دورے کا مقصد پاک بھارت کشیدگی دور کرنے کے اقدامات کرنا ہے۔

دوسری طرف لاہور میں سپرئیر یونیورسٹی کے کانوکیشن سے خطاب کرتے ہوئے فوادچوہدری ںے کہا کہ پوری دنیا پاکستان کے مؤقف کی تائید کررہی ہے، پاکستان میں تمام پارٹیاں متحد ہیں جس کی وجہ سے ایران، ترکی، قطر اور تمام ممالک پاکستان کی پشت پر کھڑے ہیں،وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے وزیرخارجہ عادل الجبیر کل بروز اتوار پاکستان تشریف لائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارا مقابلہ اس وقت تقسیم شدہ بھارت سے ہے اور کامیابی متحد لوگوں کی ہوتی ہے، پاکستان خطےمیں امن چاہتاہے، افغانستان میں امن کےلیےہم نےمخلصانہ کوششیں کیں، افغانستان میں بدامنی سےپاکستان بھی متاثرہوتاہے۔وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ خطےمیں امن واستحکام ہماری ترجیح ہے، افغانستان میں جب حالات خراب ہوتے ہیں تو پاکستان میں بھی منفی اثر آتا ہے، جنگ سےنہیں مل بیٹھنےسےمسائل حل ہوتےہیں، بھارت کواپنامائینڈ سیٹ تبدیل کرنےکی ضرورت ہے، کشمیرکے لیے ہم نے 3جنگیں لڑی ہیں اور چوتھی کیلئے بھی تیار ہیں۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ پاکستان کی متحد قیادت نے پیغام دیا کہ بھارت کے پاس تین آپشن ہیں جنگ کرنا چاہتے ہیں تو ہم پہلے تین جنگیں لڑ چکے ہیں چوتھی بھی لڑ لیں گے، دوسرا آپشن یہ ہے کہ اگر بھارت ہمیں کمزور کرنا چاہتا ہے تو ہم بھی اسے کمزور کریں گے، بھارت کو تیسرا آپشن یہ دیا کہ آئیں بیٹھ کر امن کی بات کریں۔

انہوں نے کہا کہ کشمیرسے ہمارا خون کا رشتہ ہے، مسئلہ کشمیرحل کیے بغیرخطےمیں امن قائم نہیں ہوسکتا، بھارت نےکشمیرکوفوجی چھاوَنی میں تبدیل کردیا ہے، وہاں ہر 10 کشمیریوں پر ایک بھارتی فوجی لگادیا گیا ہے، بھارت کشمیر کو ایک علاقہ کے طور پر دیکھتا ہے لیکن ہمارا رشتہ خون کا ہے۔

مزید : قومی