آسٹریا میں کورونا سربراہی اجلاس سے پہلے وائرس سے 13اموات 

آسٹریا میں کورونا سربراہی اجلاس سے پہلے وائرس سے 13اموات 
آسٹریا میں کورونا سربراہی اجلاس سے پہلے وائرس سے 13اموات 

  

ویانا(المیر باجوہ)آسٹریا میں کورونا وائرس کی روک تھام کے حوالے سے سربراہی اجلاس منعقد کیا گیا ہے جس سے پہلے ایک روز میں کورونا وائرس سے مزید 13اموات ہو گئیں جبکہ ایک ہزار 409نئے کورونا کیسز سامنے آئے ہیں ۔ آسٹریا میں کورونا کیسز بڑھ رہے ہیں اور موجودہ کورونا تعداد لگ بھگ ہر روز ریکارڈ توڑتی ہے۔ 

 پیر کو وفاقی حکومت کے افتتاحی اجلاس سے کچھ دیر قبل صحت کے حکام نے کورونا وائرس سے 13 اموات کی اطلاع دی ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ پیر کی تعداد دو پچھلے ہفتوں کے مقابلے میں نمایاں طور پر بڑھی ہے ۔

 آسٹریا میں اب تک چار لاکھ 60ہزار 849 مثبت ٹیسٹ آئے ہیں۔یکم مارچ تک آسٹریا بھر میں آٹھ ہزار 547 افراد کورونا وائرس کے نتائج سے مر چکے ہیں اور چار لاکھ 32ہزار صحت یاب ہوچکے ہیں۔ اس وقت کورونا وائرس کی وجہ سے ایک ہزار 353 افراد ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ ان میں سے 290 افراد کی نگہداشت انتہائی نگہداشت کے یونٹوں میں زیر علاج ہیں۔

 اس وقت کورونا وائرس کے حالات کے پیش نظر یہ انتہائی اہم ہے کہ آنے والے ہفتوں میں یہ کس طرح جاری رہے گا۔ بہت سارے کورونا وائرس کے شکار افراد امید کرتے ہیں کہ پیر کو ہونے والا کورونا اجلاس اہم پیش رفت ثابت ہوگا۔ تاہم تازہ ترین پیشرفتوں کے پیش نظر لگتا ہے کہ مزید افتتاحی اقدامات نے بہت دور جانا شروع کیا ہے۔ ابھی حال ہی میں حکومت کے مشیر ایوا شرن مین نے مزید نرمی کے خلاف بات کی ہے۔ وزیر صحت روڈلف انشوبر نے کہاکورونا پابندیوں میں اضافے کی وجہ نیا کورونا وائرس ہے ۔

مزید :

بین الاقوامی -