ماہ فروری میں اوسط رسپانس ٹائم کیساتھ 111332ایمرجنسیز کو رسپانڈ کیا

 ماہ فروری میں اوسط رسپانس ٹائم کیساتھ 111332ایمرجنسیز کو رسپانڈ کیا

  

لاہور(کرائم رپورٹر)ڈائریکٹر جنرل پنجاب ایمرجنسی سروس ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر رضوان نصیر نے کہا کہ پنجاب ایمرجنسی سروس ڈیپارٹمنٹ نے ماہ فروری2022  کے دوران پنجاب بھر میں سات منٹ کے اوسط رسپانس ٹائم کے ساتھ 111332 ایمرجنسیز کو رسپانڈ کرتے ہوئے 107798 متاثرین کو سروسزفراہم کیں انہوں نے کہا کہ111332 ایمرجنسیزمیں 28220 روڈ ٹریفک حادثات، 69025میڈیکل ایمرجنسیز، 1410 آتشزدگی کے واقعات، 2201جرائم کے واقعات، 35 ڈوبنے کے واقعات، 43عمارتیں گرنے اور9764 متفرق آپریشن شامل ہیں  ان خیالات کا اظہار  پنجاب ایمرجنسی سروس ڈیپارٹمنٹ ہیڈ کوارٹرز میں منعقدہ ماہانہ جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا جس میں ریسکیو ہیڈ کوارٹرز اور ایمرجنسی سروسز اکیڈمی کے تمام ونگز کے سربراہان نے شرکت کی۔اس موقع پر صوبائی مانیٹرنگ سیل کے سربراہ نے ڈائریکٹر جنرل پنجاب ایمرجنسی سروس ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر رضوان نصیرکو ماہانہ ایمرجنسی کے اعدادوشمار سے آگاہ کیا۔

 انہیں بتایا گیا کہ گزشتہ ماہ کے دوران پنجاب میں 28220 روڈ ٹریفک حادثات پیش آئے جن میں 321 افراد جاں بحق ہوئے۔ ان ٹریفک حادثات میں سے زیادہ تر ٹریفک حادثات 7063 لاہور میں ہوئے جن میں 34 افراد ہلاک ہوئے۔

 اسی طرح فیصل آباد میں 2291،ملتان میں 2130، گوجرانوالہ میں 1743، راولپنڈی میں 995،بہاولپور میں 943جبکہ باقی 30اضلاع میں 13055 روڈ ٹریفک حادثات پیش آئے۔اسی طرح آگ کے زیادہ تر واقعات بڑے اضلاع میں ہوئے جن میں لاہور میں 282، فیصل آباد میں 104، راولپنڈی میں 104، گوجرانوالہ میں 68،ملتان میں 54 اورسرگودھا میں 42 رپورٹ ہوئے۔

 ڈاکٹر رضوان نے ایمرجنسی کے اعداد و شمار کا تفصیلی جائزہ لینے کے بعد گزشتہ ماہ کے دوران28220روڈ ٹریفک حادثات میں 321 افراد کی ہلاکتوں پر گہری تشویش کا اظہار کیا۔ انہوں نے موٹر سائیکل سواروں سے درخواست کی کہ وہ روڈ سیفٹی اقدامات اپنائیں اور اپنی حد رفتار 50 کلومیٹر فی گھنٹہ سے تجاوز نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ شہری ٹریفک قوانین پر پیرا ہوں اور ہمیشہ انتہائی بائیں لائین میں گاڑی چلائیں۔ ڈاکٹررضوان نصیرنے والدین سے اپیل کی کہ وہ اپنے کم عمر بچوں کو موٹر سائیکل یا گاڑی چلانے کی اجازت ہرگزنہ دیں۔ ڈاکٹر رضوان نے مزید کہا کہ حادثات کی روک تھام اور سیفٹی کلچر کو کو فروغ دینے کے لیے رویوں میں مثبت تبدیلی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کوحادثات سے بچاؤاور سیفٹی کو فروغ دینے کیلئے ریسکیو 1122کا ساتھ دینا چاہیے۔

مزید :

علاقائی -