پاک سعودی دوطرفہ تعلقات میں نئی جہت پیداہوئی، شیخ رشید احمد 

پاک سعودی دوطرفہ تعلقات میں نئی جہت پیداہوئی، شیخ رشید احمد 

  

اسلام آباد(آئی این پی) وزیر داخلہ شیخ رشیداحمد نے کہا ہے کہ سعودی وزیر داخلہ کی دفاعی نمائش میں شرکت کی دعوت پر انکا ممنو ن ہوں، دو طرفہ تعلقات میں سعودی وزیر داخلہ پرنس عبدالعزیز بن سعود کا دورہ پاکستان انتہائی سود مند تھا،سعودی وزیر داخلہ کی پاکستان آمد سے پاک سعودی دو طرفہ تعلقات میں نئی جہت پیدا ہوئی ہے،آنیوالے دنوں میں داخلہ وزارتوں کے درمیان روابط میں مزید وسعت آئیگی۔بین الاقوامی دفاعی نمائش 6 سے 9 مارچ کو سعودی دارالحکومت ریاض میں منعقد ہوگی۔ سعودی وزیر داخلہ کی پاکستان آمد سے پاک سعودی دو طرفہ تعلقات میں نئی جہت پیدا ہوئی ہے،آنے والے دنوں میں داخلہ وزارتوں کے درمیان روابط میں مزید وسعت آئیگی،سعودی وزیر داخلہ کی دفاعی نمائش میں شرکت کی دعوت پر انکا ممنو ن ہوں۔ شیخ رشید احمد نے کہا دفاعی کانفرنس کی افتتاحی تقریب میں شامل ہونے کی بھر پور کوشش کرونگا، اس موقع پر سعودی سفیر نے کہا پاکستان اورسعودی عرب کے درمیان سیاحت اور تجارت کو فروغ دینے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں،سعودی عرب کے عوام پاکستان کیلئے انتہای نیک جذبات رکھتے ہیں۔ دریں اثناء شیخ رشید احمد نے کہا  ہے کہ پاکستان میں موجود کینگرو ٹیم کے خلاف بھارتی سازش ناکام ہوگئی ہے، آسڑیلوی ٹیم کو پاکستان کی مہمان نوازی پسند آئے گی، پاکستان میں جہاں بجلی گیس نہیں ہوتی وہاں بھی کرکٹ ہوتی ہے۔ راولپنڈی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا  آسٹریلین ٹیم کو بھی اندازہ ہے کہ پاکستانی عوام کرکٹ کے شیدائی ہیں، جہاں بجلی گیس نہیں ہوتی وہاں بھی کرکٹ ہوتی ہے، ہماری قوم مہمان نواز قوم ہے، ہماری مہمان نوازی میں کسی قسم کی کمی نہیں ہوگی۔ بھارت کی جانب سے آسٹریلوی کرکٹ ٹیم کو دھمکی آمیز پیغامات بھیجے جانے پر وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ بھارت کی سازش ناکام ہوگئی ہے، ہم آسٹریلین ٹیم کو خوش آمدید کہتے ہیں، کینگرو ٹیم کو سربراہ مملکت کے برابر سیکیورٹی دی گئی ہے۔ آسٹریلین ٹیم کو ہماری مہمان نوازی پسند آئے گی، بھارت ہماری خوشی میں خوش نہیں ہے، انتظامیہ، پولیس اور سیکیورٹی فورسز بہترین کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاک فوج اور تمام اداروں کو خراج تحسین پیش کرنے آیا ہوں، اسلام آباد میں دنیا کا ماڈرن اسٹیڈیم اور فائیو اسٹار ہوٹل بنا رہے ہیں۔

شیخ رشید 

مزید :

صفحہ آخر -