خاتون محتسب پنجاب کا چار ڈپٹی کمشنرز کو توہین عدالت کا نوٹس، 15مارچ کو طلب

  خاتون محتسب پنجاب کا چار ڈپٹی کمشنرز کو توہین عدالت کا نوٹس، 15مارچ کو طلب

  

     لاہور(جاوید اقبال)خاتون محتسب پنجاب نبیلہ خاں نے چار اضلاع کے ڈپٹی کمشنر کو توہین عدالت میں طلب کر لیا ہے جن اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز کو توہین عدالت کے نوٹس جاری کئے گئے ہیں ان میں ڈپٹی کمشنر لاہور علی شیر چٹھہ، ڈپٹی کمشنر خوشاب، ڈپٹی کمشنر رحیم یار خان کے نام شامل ہیں ان کو نوٹس جاری کئے گئے ہیں کہ وہ 15مارچ کو ذاتی حیثیت میں پیش ہوں اور بتائیں کہ ان میں خاتون محتسب پنجاب کے فیصلوں پر عملدرآمد کیوں نہیں کروایا نوٹس میں کہا گیا ہے کہ کیوں نہ ان کے خلاف توہین عدالت عائد کر دی جائے نوٹس میں کہا گیا ہے کہ ڈپٹی کمشنر لاہور علی شیر چٹھہ کو پابند بنایا گیا تھا کہ وہ محتسب کے فیصلہ سید طلعت کلثوم کو ان کے حق میں دیئے گئے فیصلے پر عملدرآمد کروائیں اور انہیں 11اگست 2021ء کو اس حوالے سے تحریری طور پر آگاہ کیا گیا کہ وہ محتسب کے فیصلے پر ہر حال میں عمل کروائیں اور بیرون ملک سے آئی ہوئی خاتون طلعت کلثوم کے مکان پر راشد شیرازی وغیرہ سے جو کہ انہوں نے قبضہ کیا ہوا ہے سائلہ کو واپس کروائیں مگر آپ نے اس پر عملدرآمد نہیں کیا لہٰذا آپ کو توہین عدالت میں طلب کیا جاتا ہے اور آپ ذاتی حیثیت میں پیش ہو کر واضح کریں کہ آپ نے محتسب کے فیصلے پر عملدرآمد کیوں نہیں کروایا اس طرح ڈپٹی کمشنر خوشاب کو بھی توہین عدالت کا نوٹس جاری کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ آپ کو محتسب نے 18-09-2021کو تحریری حکم دیا گیا تھا کہ آپ فوری طور پر کلثوم اختر کے حق میں دیئے گئے فیصلے پر عملدرآمد کروائیں اور 7روز کے اندر محتسب کو آگاہ کریں آپ اس خلاف ورزی کا مرتکب ہوئے تو آپ کو بھی توہین عدالت میں طلب کیا جاتا ہے اسی طرح ڈپٹی کمشنر رحیم یار خان اور ڈپٹی کمشنر منڈی بہاؤ الدین کو بھی طلب کر لیا گیا ہے اس حوالے سے خاتون محتسب پنجاب مسماۃ نبیلہ خاں نے نوٹس جاری کرتے ہوئے 15مارچ کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا ہے۔ ذاتی حیثیت میں پیش نہ ہونے میں ان پر توہین عدالت کر دی جائے۔

خاتون محتسب 

مزید :

صفحہ اول -