قیمتیں 50فیصد بڑھا کر 10فیصد کم کرنامذاق،پروفیسرساجد میر

قیمتیں 50فیصد بڑھا کر 10فیصد کم کرنامذاق،پروفیسرساجد میر

  

   لاہور (سٹی رپورٹر) مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجدمیر نے کہا ہے کہ ابھی تو قیمتیں کم ہوئی ہیں، سلیکٹڈکا استعفیٰ بھی جلد آنے والا ہے،غریب آدمی کا کچومر نکل گیا ہے، پچاس فی صد قیمتیں بڑھا کر دس فی صد کم کرنا کون سا ریلیف ہے؟ مہنگائی پر عوام کا غصہ ٹھنڈا نہیں ہوا، ابھی بھی عوام تبدیلی سرکار کو بددعائیں دے رہی ہے۔اشیائے ضروریہ کی چیزیں عوام کی دسترس میں نہیں ہیں اس امر کا اظہار انہوں نے پارٹی کی صوبائی کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ پروفیسر ساجد میر کا کہنا تھا کہ جمہوری اداروں کے ہوتے ہوئے پیکا آرڈیننس غیر آئینی و غیر قانونی ہے امید ہے عدلیہ اسے کالعدم قراردے دے گی۔ حکومت کالے قانون کے ذریعے صحافیوں کا گلہ گھوٹنا چاہتی ہے جو ہم نہیں ہونے دیں گے۔دوسروں کو اخلاقیات کا درس دینے والوں کو اپنی اخلاقیات کا بھی جائزہ لینا چاہیے۔ اجلاس میں 23 مارچ کو اسلام آباد میں مہنگائی مارچ کی تیاریوں کا جائزہ لیا گیا اور بھرپورشرکت کا عزم کیا گیا  علاوہ ازیں بھارت میں حجاب پر پابندی کے خلاف قرارداد منظور کی گئی۔  اجلاس میں مولانا عبدالرشید حجازی، حافظ یونس آزاد، مولانا سبطین شاہ نقوی مولانا نعیم بٹ ودیگر نے شرکت کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -