صنعتکاروں کو بھتہ خوروں کی جانب سے دھمکیوں پر شدید تحفظا ت کا اظہار

صنعتکاروں کو بھتہ خوروں کی جانب سے دھمکیوں پر شدید تحفظا ت کا اظہار

  

    پشاور(سٹی رپورٹر)سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے حیات آباد انڈسٹریل اسٹیٹ پشاور میں سماج دشمن ٗ شرپسند عناصر اور بھتہ خوروں کی جانب سے بڑھتی ہوئی کارروائیوں اور صنعت کاروں کو دھمکیاں دینے پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے صوبائی حکومت ٗ انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخواٗ وزیراعلیٰ اور سیکورٹی اداروں کے اعلیٰ حکام سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ وہ دہشتگردی اور بھتہ خوروں کی کارروائیں کا فوری طور پر نوٹس لے کر ایسے واقعات کی روک تھام کیلئے اقدامات اٹھائیں بصورت دیگر صوبہ میں صنعتیں اور کاروبار کی بندش سے بے روزگاری میں اضافہ ہوگا جو کہ صوبائی معیشت کے لئے زہر قاتل ثابت ہوگا۔ گذشتہ روز صنعتکاروں کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے سرحد چیمبر کے صدر حسنین خورشید احمد نے کہاکہ حیات آباد صنعتی بستی پشاور میں سماج دشمن اور شرپسند عناصر اور بھتہ خور سرگرم ہوچکے ہیں اور صوبائی حکومت ٗ پولیس اور انتظامیہ غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کر رہے ہیں جس سے سماج دشمن عناصر اور بھتہ خوروں کے حوصلے بڑھ رہے ہیں جو کہ انتہائی قابل مذمت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ گذشتہ ہفتہ اور کل رات کو بھی حیات آباد انڈسٹریل اسٹیٹ پشاور میں واقع دو فیکٹریوں میں شرپسند عناصر کی جانب سے ہینڈ گرینیڈ (دستی بم) پھینکے گئے ہیں تاہم شرپسند عناصر کی کارروائیوں کے نتیجے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا لیکن اس کے باوجود صنعتکاروں کو بھتہ خوروں کی جانب سے دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ سرحد چیمبر کے صدر نے اس بات کی شدید مذمت کی ہے کہ متعلقہ فیکٹریوں کی انتظامیہ کی جانب سے حیات آباد پولیس اسٹیشن تاتارا میں FIR درج کروانے کے باوجود بھی پولیس اور متعلقہ انتظامیہ نے تاحال کوئی اقدام اور کارروائی عمل میں نہیں آئی ہے جو کہ انتہائی قابل افسوس اور مذمت ہے۔ انہوں نے کہا کہ صنعتکاروں کو بھتہ خوروں کی جانب سے کروڑوں روپے کے بھتہ نہ دینے پر مختلف قسم کی دھمکیاں دی جا رہی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ فیکٹریاں تین چار ہزارورکرز اور ملازمین کو روزگار کا ذریعہ ہے اگر یہ فیکٹریاں بند ہوگئی تو بہت سے گھرانے متاثر ہوں گے۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت ٗ پولیس اور انتظامیہ کی جانب سے نااہلی ٗ لاپرواہی اور بے حسی کی وجہ سے موجودہ سرمایہ کارٗ صنعتکار صوبہ سے چلے جائیں گے جو کہ صوبہ کی معیشت کے لئے کسی صورت بھی سود مند ثابت نہیں ہوگا اور شرپسند عناصر اور بھتہ خور اپنے مذموم عزائم کی تکمیل میں کامیاب ہوجائیں گے۔ سرحد چیمبر کے صدر حسنین خورشید احمد نے کہا کہ صوبائی حکومت کی لاپرواہی اور بے حسی کی وجہ سے صوبہ کی معیشت کو لے ڈوبے گی۔ انہوں نے وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا  ٗ کور کمانڈر پشاور ٗ وفاقی وزیر داخلہ اور انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا سے پرزور مطالبہ کیا کہ وہ دہشت گردی کے واقعات اور بھتہ خوروں کے خلاف موثر اقدامات اٹھائیں بصورت دیگر صوبہ میں صنعتیں اور کاروبار کی بندش کی وجہ سے بے روزگاری میں اضافہ ہوگا جوکہ صوبائی معیشت کے لئے زہر قاتل ثابت ہوگا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -