سات سال سے عمران خان مقابلے سے بھاگ رہے ہیں: اکبر ایس بابر

سات سال سے عمران خان مقابلے سے بھاگ رہے ہیں: اکبر ایس بابر

  

      اسلام آباد(آئی این پی)پاکستان تحریک انصاف کے بانی رکن اکبر ایس بابر نے کہا ہے کہ گزشتہ سات سال سے عمران خان مقابلے سے بھاگ رہے ہیں، خان صاحب آپ میچ ہار چکے ہیں، میچ کا یہ آخری اوور ہے آپ کو ابھی بھی 100 رنز چاہئیں، سٹیٹ بینک کے ریکارڈ سے جو حقیقت آشکار ہوئی اس سے ایک چیز ثابت ہوتی ہے کہ عمران خان نے جو سرٹیفکیٹ الیکشن کمیشن میں جمع کرایا وہ جعلی تھا، اس ریکارڈ کے مطابق اربوں روپے کی بے قاعدگی ہوئی ہے،غیر قانونی فنڈنگ ہوئی ہیے، غیر قانونی طور پر غیر ملکی کمپنیوں سے فنڈنگ ہوئی ہے، غیر ملکی شہریوں کی فنڈنگ ہوئی ہے، رپورٹ کے مطابق 2008-09میں پی ٹی آئی نے دو اکاؤنٹ ظاہر کئے جبکہ  اسٹیٹ بینک کا ریکارڈ کہتا ہے ان کے 7اکاؤنٹ تھے، اتنا ثبوت جمع ہو گیا ہے کہ ہم سمجھتے ہیں الیکشن کمیشن کو اس پر مزید کارروائی کے ساتھ فیصلہ کرنا چاہیے۔ نیشنل پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اکبر ایس بابر نے کہا کہ اسٹیٹ بینک کے ریکارڈ سے جو فائنڈنگز آئیں اس سے ایک چیز ثابت ہوتی ہے کہ عمران خان نے جو سرٹیفکیٹ الیکشن کمیشن میں جمع کرایا وہ جعلی تھا، پارٹی کا چیئرمین ایک سرٹیفیکیٹ دیتا ہے جس میں وہ یہ کہتا ہے کہ میں نے کسی قسم کی کوئی ممنوعہ یا غیر قانونی فنڈنگ نہیں وصول کی، جو ثبوت اب سامنے آرہے ہیں اس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ وہ سرٹیفکیٹ جعلی تھا، اس ریکارڈ کے مطابق اربوں روپے کی بے قاعدگی ہوئی ہے، اکبر ایس بابر نے کہا کہ ابھی بھی معاملات ایسے ہیں جن میں حقائق آنا باقی ہیں، پی ٹی آئی کے چار ملازمین کے ذاتی اکاؤنٹس میں پیسہ آیا، پی ٹی آئی کے تمام انٹرنیشنل اکاؤنٹس ابھی تک خفیہ رکھے گئے ہیں، انہوں نے کہا کہ امریکی ڈالرز میں جو غیر قانونی فنڈنگ سامنے آئی ہے، وہ اسٹیٹ بینک کے ریکارڈ کے مطابق 7.3ملین ڈالر کی غیر قانونی فنڈنگ جس میں کمپنیوں سے بھی پیسہ آیا ہے، بھارتیوں سے بھی پیسہ آیا ہے، یہ جوخفیہ اکاؤنٹس رکھے گئے ہیں وہ اس سرٹیفکیٹ کو جعلی ظاہر کرتے ہیں کہ انہوں نے اکاؤنٹس چھپائے، انہوں نے کہا کہ جب اسٹیٹ بینک نے تمام بینکوں کو خطوط لکھے کہ آپ اپنے تمام پی ٹی آئی کے اکاؤنٹس الیکشن کمیشن کو جمع کرائیں، 9بینکوں کی طرف سے جو جوابات آئے ہیں وہ ہم سے شیئر کئے گئے ہیں،41بینکوں کے کیا جوابات آئے ہم سے وہ جوابات شیئر نہیں کئے گئے، تقریبا12 ،13ممالک ہیں، جہاں سے پیسہ آیا وہ مکمل طور پر چھپایا گیا، الیکشن کمیشن کی سکروٹنی کمیٹی نے رپورٹ میں لکھا ہے کہ جو چار سال میں پی ٹی آئی کی طرف سے دستاویزات آئیں یہ غیر تصدیق شدہ ہیں توپھر وہ چار سال وہ ریکارڈ چھپایاکیوں گیا، اکبر ایس بابر نے کہا کہ میں تو پی ٹی آئی کا آج بھی رکن ہوں، جو ثبوت سامنے آئے ہیں ان کی بنیاد پر عمران خان کو نوٹس دیا جانا چاہیے۔

اکبر ایس بابر 

مزید :

صفحہ آخر -