وزیراعظم کا ریلیف پیکیج گرتی ہوئی حکومت کو بچانے کی کوشش ہے: رضا ربانی

  وزیراعظم کا ریلیف پیکیج گرتی ہوئی حکومت کو بچانے کی کوشش ہے: رضا ربانی

  

       اسلام آ باد (آئی این پی)  پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما  وسابق چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے کہا  ہے کہ آئی ایم ایف کو خوش کرنے کے لیے مہنگائی کا بوجھ عوام پر ڈال دیا گیا ہے۔ اپنے جاری کردہ بیان میں  میاں رضا ربانی نے کہا کہ حکومت کی جانب سے اعلان کردہ اقتصادی پیکج میں بہت دیر ہو چکی ہے، یہ پیکج ٹوٹتی ہوئی حکومت کو بچانے کی کوشش ہے۔ میاں رضا ربانی نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات اور بجلی کی قیمتوں میں کمی سے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں پر کوئی فرق نہیں پڑے گا جو ریکارڈ بلندی پر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کو خوش کرنے کے لیے مہنگائی کا بوجھ عوام پر ڈال دیا گیا ہے، حکومت کے پاس آئی ایم ایف کے سامنے کھڑے ہونے کی سیاسی قوت نہیں تھی۔ سابق چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ گزشتہ روز نپرا نے 5.95 روپے فی یونٹ اضافے کی منظوری دی اور حکومت نے بجلی کی قیمت میں پانچ روپے کمی کی منظوری دی۔ انہوں نے مزید کہا کہ نیپرا کی سمری منظور ہونے پر عوام کو بجلی کی قیمت میں ریلیف صفر ہوجائے گا۔ پاکستان پیپلزپارٹی  کی نائب  صدر وسینیٹر  شیری رحمان نے کہا ہے کہ پٹرول 12 روپے مہنگا کر کے 10 روپے کمی کی خوشخبری سنائی گئی، تعجب ہے حکومت اس کو "ریلیف" کا نام دے رہی ہے۔  سینیٹر شیری رحمان نے اپنے ردعمل میں کہا کہ عوامی مارچ کے دبا ومیں آ کر پٹرول اور بجلی کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کیا گیا، عوام نے اس نام نہاد ریلیف کو مسترد کر دیا ہے، ہوشربا مہنگائی اور بیروزگاری میں یہ بہت ہی معمولی ریلیف ہے، ساڑھے تین سال میں جو مہنگائی میں اضافہ ہوا، اس میں کمی کب ہوگی؟ سالانہ سات سے آٹھ سو ارب روپے کا بوجھ کہاں سے پورا کیا جائے گا؟ وزیراعظم نے اعلان کیا ہے کہ آئی ٹی سیکٹر میں سرمایہ کاری کرنے والوں سے پوچھ گچھ نہیں کی جائے گی، کیا یہ سلیکٹڈ احتساب صرف مخالفین کے لئے ہے؟۔

پیپلز پارٹی

مزید :

صفحہ آخر -