نائیجیریا میں فوجی آپریشن ، بوکو حرام کی قید سے 234 خواتین اور بچے بازیاب

نائیجیریا میں فوجی آپریشن ، بوکو حرام کی قید سے 234 خواتین اور بچے بازیاب
نائیجیریا میں فوجی آپریشن ، بوکو حرام کی قید سے 234 خواتین اور بچے بازیاب

  


 ابو جا (مانیٹرنگ ڈیسک)نائجیریا کی فوج کے مطابق اسلامی شدت پسند گروہ بوکو حرام کی قید سے 234 خواتین اور بچوں کو رہا کروالیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق فوجی حکام نےملک کے شمال مشرق کے جنگلات میں موجود شدت پسندوں کے خلاف کارروائی کی گئی تاہم ابھی یہ واضح نہیں ہے کہ رہا ہونے والوں میں گذشتہ سال اپریل میں اغوا ہونے والی چیبوک سکول کی 200 سے زائد طالبات میں سے کوئی شامل ہے یا نہیں۔ فوجی حکام نے بتایا  کہ مزید 234 خواتین اور بچوں کو کورئی اور کنڈونگا کے علاقوں سے بحفاظت نکالا گیا۔فوجی حکام کے مطابق رہا ہونے والوں کی شناخت معلوم کرنے کے لیے ان سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔اس سے قبل نائجیریا کے فوجی حکام نے دعویٰ کیا تھا کہ انھوں نے سیمبیسا کے جنگلات میں اسلامی شدت پسند گروہ کے 13 کیمپوں کو تباہ کر دیا ہے۔یاد رہے کہ بوکو حرام کی مسلح بغاوت میں سنہ 2012 سے اب تک 15 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں اور تشدد کی یہ لہر اب پڑوسی ممالک نائجر، چاڈ اور کمیرون تک پھیل گئی ہے گذشتہ سال اکتوبر میں حکومت نے جنگ بندی اور چیبوک سکول سے اغوا کی جانے والی لڑکیوں کی رہائی کے متعلق معاہدے کی بات کہی تھی لیکن بوکو حرام نے اسے مسترد کر دیا تھا۔چیبوک سکول کی لڑکیوں کے اغوا کیے جانے پر عالمی سطح پر غم و غصے کا اظہار کیا گیا تھا اور ان کی بازیابی کے لیے ’برنگ بیک آور گرلز‘ نامی آن لائن مہم میں متعدد افراد نے شرکت کی تھی۔

مزید : بین الاقوامی