بھارت میں جہالت کی انتہا!پنڈت ہونے والے بچوں کی جنس طے کرنے کا دعوی کرنے لگا

بھارت میں جہالت کی انتہا!پنڈت ہونے والے بچوں کی جنس طے کرنے کا دعوی کرنے لگا
بھارت میں جہالت کی انتہا!پنڈت ہونے والے بچوں کی جنس طے کرنے کا دعوی کرنے لگا

  


نئی دلی (نیوز ڈیسک) بھارت کے مشہور اور متنازعہ گرو بابا رام دیو نے نام نہاد ”بیٹا پیدا کرنے والی دوا“ متعارف کرواکر بھارت میں ایک نیا تنازع کھڑا کردیا ہے جبکہ ملک کی پارلیمنٹ میں اس دوا پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ کردیا گیا ہے۔

ترکی میں 2 ججوں کو گرفتار کر لیا گیا

بھارتی پارلیمنٹ کے رکن کے سی تیاگی نے پارلیمنٹ کے اجلاس میں ”پترا جیوک بیج“ نامی دوا لہراتے ہوئے بتایا کہ انہوں نے اسے گرو رام دیو کی دیویا فارمیسی سے خریدا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ اس دوا کے بارے میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ یہ بیٹے کی پیدائش کو یقینی بناتی ہے۔ ڈپٹی چیئرمین پی کے کورین کا کہنا تھا کہ دوا یا دیگر طریقوں سے بچے کی جنس کا انتخاب کرنا قانون اور آئین کے خلاف ہے لیکن ان کا کہنا تھا کہ اس کے متعلق کچھ نہیں کیا جاسکتا کیونکہ یہ مسئلہ ڈیپارٹمنٹ آف ایوش سے متعلق ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ حکومت ملک میں جنسی تناسب کے متعلق سنجیدہ ہے اور وزیراعظم نریندر مودی ذاتی طور پر ”بیٹی بچاﺅ، بیٹی پڑھاﺅ مہم“ کی نگرانی کررہے ہیں۔ اپوزیشن اور متعدد حکومتی ارکان نے فوری طور پر مذکورہ دوا پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس