مولانا فضل الرحمان کے پمز میں طبی معائنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل،کارکنوں کی شکایت پر ڈاکٹر معطل، انکوائری کمیٹی قائم

مولانا فضل الرحمان کے پمز میں طبی معائنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر ...
مولانا فضل الرحمان کے پمز میں طبی معائنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل،کارکنوں کی شکایت پر ڈاکٹر معطل، انکوائری کمیٹی قائم

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (پمز) کے ایک ڈاکٹر نے جمعیت علمائے اسلام (ف)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے طبی معائنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر ڈال دی ۔ پاکستان ٹو ڈے کے مطابق پمز کے ڈاکٹروں نے مریض کے معاملات خفیہ رکھنے کی اخلاقی اور قانونی ذمہ داری کو نظر انداز کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کے طبی معائنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر پوسٹ کر دی  ۔

’مریم ۔ ۔۔ میں تم سے بہت پیار کرتاہوں‘ کویتی شہری کا انوکھا اظہار محبت

جے یو آئی (ف)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کے اہل خانہ اور ان کے کارکنوں کی جانب سے شکایات موصول ہونے کے بعد پمز انتظامیہ نے ویڈیو اپ لوڈ کرنے والے ڈاکٹر کو معطل کر دیا ہے اور مولانا فضل الرحمان سے ڈاکٹر کی حرکت پر معافی مانگی ہے ۔ پمز انتظامیہ نے معاملے کی تحقیقات کے لئے تین رکنی کمیٹی بھی قائم کر دی ہے ۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاو¿ن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں۔

یاد رہے کہ مولانا فضل الرحمان کو معدے میں شدید تکلیف کے باعث 28اپریل کو پمز ہسپتال پہنچایا گیا تھا جہاں کئی گھنٹے انہیں زیر نگہداشت رکھا گیا تھا اور ضروری ٹیسٹ لئے جانے کے بعد انہیں اسی روز شام کو ہسپتال سے فارغ کر دیا گیا تھا ۔ اگلے روز مولانا فضل الرحمان کی 15سیکنڈ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر شیئر کی گئی تھی جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک ڈاکٹر مولانا فضل الرحمان کا معائنہ کر رہا ہے ۔ مزید برآں یہ تین ہفتوں میں پمز کی جانب سے پیش آنیوالا دوسرا واقعہ ہے ۔ 9اپریل کو حیات و موت کی کشمکش میں مبتلا 20سالہ معذور لڑکی کو مبینہ طور پر ہسپتال کے ملازم نے جنسی درندگی کا نشانہ بنا یا تھا ۔

مزید : اسلام آباد