پاکستان اسلامی ریاست ہے ، قر آن وسنت سے متصادم کو ئی قانون نہیں بنا یا جا سکتا ،اکرم درانی

پاکستان اسلامی ریاست ہے ، قر آن وسنت سے متصادم کو ئی قانون نہیں بنا یا جا ...

لاہور(نمائندہ خصوصی) اسلام کے نام پر حاصل کر نے والے وطن عزیز کو سیکولر ریا ست نہیں بنا یا جا سکتا ہے اور نہ ہی غیر اسلامی قوانین اس ملک میں نافذکیا جا سکتے ہیں آئین میں طے کر دیا گیا ہے کہ یہ وطن اسلامی ریاست ہے اور اس میں قر آن وسنت سے متصادم کو ئی قانون نہیں بنا یا جا سکتا ہے ،آج جمعیت علماء کی قیادت مو لا نا فضل الرحمن کی صورت میں اسمبلی میں پا کستان کو سیکولر بنانے کی سازشوں کا مقابلہ کر رہی ہے پاکستان ہمارا وطن ہے ہم اس وطن کی حفاظت اپنے گھر سے بھی زیادہ ضروری سمجھتے ہیں،جے یو آئی 2017ء ؁ میں تاریخ ساز عالمی صد سالہ اجتماع پشاور میں کرے گی جس میں دنیا بھر سے دینی جماعتوں کے قائد ین شریک ہوں گے میڈیا آفس کے مطابق ان خیا لا ت کا اظہار جے یو آئی کے راہنماء اور وفاقی وزیر ہاؤسنگ الحاج اکرم خان درانی اور جے یو آئی کے قائم مقام سیکر ٹری جنرل مولانامحمد امجد خان نے جامعہ دارالہدی میں سالانہ دستار فضیلت کا نفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیاحا جی اکرم خان درانی ، مولانا محمد امجد خان نے کہا ہے کہ دینی مدارس میں لاکھوں طلباء اور طالبات نے حکومتی گرانٹ کے بغیر دین سیکھ رہے ہیں اور قر آ ن کریم حفظ کر رہے ہیں کسی مراعات کے بغیر داد دینے کی بجائے انھیں دہشت گرد ہونے کا طعنہ دیا جا تا ہے ہمارے نزدیک اصلی دہشت گرد ملکی خزانہ لوٹنے والے اور شریعت اور آئین کے خلاف قانون سازی کر نے کا جذبہ رکھنے والے ہیں انہوں نے کہاکہ امن کے قیام کے لیئے دینی جماعتیں اور دینی ادارے اپنا کردار ادا کر رہے ہیں اور آئندہ بھی کرتے رہیں گے انہو ں نے کہا کہ پی پی کا مستقبل دیکھتے ہوئے بلاول زرادری ملک کے صدر اور وزیر اعظم کے لیئے ہندو اور سکھ کو آئین سے ماوراعہدے دینا چاہتے ہیں انہوں نے کہا ک خواتین کے حقوق کے سب سے بڑاے محافظ ہم ہیں حکومت کو فصلیں کاٹتی ہوئیں غریب عورتیں کیوں نظر نہیں اتی خواتین کو حق دینا ہے تو انھیں مشقت سے آزاد کیا جا ئے ۔جے یو آئی کے راہنماؤں نے کہا کہ قوم سوچ رہی ہے کہ پانامہ لیکس کہیں پا جامہ لیکس ہی نہ بن جائے اس لیکس کے اثرات اسلام آباد کی حدود پر کہیں مرتب نہ ہوجائیں انہوں نے کہا کہ خواتین کے حقوق کے نام پر بل این جی اوز مرتب کر رہی ہیں ا ن اور کا مقصد پاکستان میں مغربی ثقافت مسلط کر نا ہے لیکن اب حکومت کو مولانا فضل الرحمن اور دیگر دینی جماعتوں کی بات سمجھ آنی شروع ہوگئی ہے پنجاب حکومت نے اس بل پر عمل درآمد روک دیا ہے اور بل کو آئین اور شریت ڈھالنے کے لیئے کمیٹی قائم کر دی گئی ہے انہوں نے کہا کہ دینی مدارس نے ایسے افراد تیار کیئے ہیں جنہوں نے ملک کو آئین دیا ہے اور قانون سازی میں اہم کردار ادا کیا ہے مولانا مفتی محمود اور دیگر اکابرین کا کردار تاریخ کا لازوال حصہ ہے انہوں نے کہا کہ عوام کی ذمہ داری ہے کہ آئندہ الیکشن میں پاکستان کے نظریے کو تبدیل کر نے کی سازشیں کر نے والوں کو مسترد کر دے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1