13لیبر قوانین قانون سازی کے آخری مراحل میں ہیں، عبد الرشید سولنگی

13لیبر قوانین قانون سازی کے آخری مراحل میں ہیں، عبد الرشید سولنگی

کراچی (اسٹاف رپورٹر) لیبر قوانین کے 13 مسودے سندھ کی صوبائی اسمبلی میں قانون سازی کے آخری مرحلے میں ہیں، جنہیں جلد قانون کا حصہ بنایا جائے گا، سندھ اسمبلی ہی ملک کی وہ واحد اسمبلی ہوگی جس میں اسٹیک ہولڈز کی مشاورت سے مزدوروں کی صحت اور تحفظ کو لیکر قانون سازی کی جارہی ہے جس کا سب سے زیادہ فائدہ صنعتی ترقی کی صورت میں ملے گا، ان خیالات کا اظہار سندھ حکومت کے سیکریٹری لیبر عبدالرشید سولنگی نے ایمپلائز فیڈریشن آف پاکستان کے کام کے دوران مزدوروں کے تحفظ اور صحت سے متعلق گیارہویں ایوارڈ تقریب اور سینمار سے خطاب میں کیا۔اس موقع پر سیکریٹری لیبر نے لیبر قوانین پر عملدرآمد کے لیے اسٹیک ہولڈرز کی معاونت سے ٹاسک فورس کے قیام کا اعلان بھی کی جو مزدوروں سے متعلق قوانین پر سختی سے عملدرآمد کو یقینی بنائے گی، سیکریٹری لیبر نے صوبے میں قائم ڈیزاسٹر رسپانس میکنیزم سے بھی آگاہ کیا جس میں چھوٹی موٹی چوٹوں اور حادثات یا کسی بھی ہنگامی صورتحال کے نتیجے میں صنعتی علاقوں میں ہونے والے نقصانات سے بچنے میں کس طرح اپنا کردار ادا کرتا ہے۔ اس مو قع پر انٹر نیشنل لیبر آرگنائزیشن کی کنٹری ڈائریکٹر مس انگرڈ کرسٹینسن نے اپن خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا اس بات پر زور دیا کہ لیبر قوانین کو مظبوط اور قابل عمل بنانے کے لیے سہ فریقی تعاون کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے،ان کا کہنا تھا کہ کام کرنے کے جگہ پر مزدوروں کی زندگی کے تحفظ ، صحت اور وقار کو محفوظ بنانے کے لیے ملکر جدوجہد کرنے کی ضرورت ہے، اس موقع پر انھوں نے OSH مینجمنٹ کے نظام کی کارکردگی کو بھی سراہا۔تقریب سے خطاب میں پاکستان ورکرز فیڈریشن کے سیکریٹری جنرل ظہور اعوان کا کہنا تھا کہ صحت اور کام کے دوران تحفظ ہرمزدور کا ایجنڈا ہے، جس پر حکومت کو چاہیے کہ وہ خصوصی توجہ دے، اپنے خطاب میں انھوں نے تعمیراتی شعبے میں کام کرنے والے مزدوروں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کو چاہیے کہ وہ ایسے مزدوروں کی صحت اور تحفظ کو فروغ دے جہاں خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔اس سے قبل ایمپلائز فیڈریشن آف پاکستان کے صدر خواجہ محمد نعمان نے بھی تقریب سے خطاب کیا اور ایمپلائز فیڈریشن آف پاکستان کی جانب سے مزدوروں کے تحفظ اور صحت سے متعلق اٹھائے گئے اقدامات سے حاضرین کو آگاہ کیا، اس موقع پر انھوں نے مزدوروں کے مئی 2016سے اردوزبان میںOSH&Eٹریننگ پروگرام کے آغاز کا اعلان بھی کیا۔ اس موقع پر نیشنل شپنگ کارپوریشن کے چیئرمین عارف الٰہی نے اپنے خطاب میں ایمپلائز فیڈریشن آف پاکستان کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے ان کے مقصد کو آگے بڑھانے کے عزم کا اظہار بھی کیا، ان کا کہنا تھا کے کسی بھی ادارے کی ترقی میں اس کے ملازمین کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے، ادارے کے فروغ کے لیے ملازمین یا مزدوروں کے تحفظ اور صحت کا خیال رکھنا اتنا ہی اہم ہے جتنا کہ ادارے کی کارکردگی کا ۔

مزید : کراچی صفحہ آخر