نوشہرہ ، بجلی کی ناروالوڈشیڈنگ کیخلاف کارخانہ داراور مزدور سراپا احتجاج

نوشہرہ ، بجلی کی ناروالوڈشیڈنگ کیخلاف کارخانہ داراور مزدور سراپا احتجاج

 نوشہرہ(بیورورپورٹ)رسالپور انڈسٹریل اسٹیٹ میں بجلی کی ناروا اور غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ نے کارخانہ دار اور مزدوروں کا جینا محال کرکے رکھ دیا محکمہ واپڈا کا رسالپور انڈسٹریل سٹیٹ کے ساتھ سوتیلی ماں جیسے سلوک نے ہزاروں مزدور وں بلخصوص خواتین مزدوروں کے روزگار کو داؤ پر لگادیا اگر سات دن کے اندر اندر بجلی کا مسئلہ حل نہ کیاگیا تو تمام کارخانوں کو احتجاجاً بند کردیں گے ان خیالات کااظہار رسالپور انڈسٹریل اسٹیٹ کے صدر اشفاق پراچہ ، جنرل سیکرٹری فیاض باچا، محمدزاہد، طیب اور فدا خان نے نوشہرہ پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ رسالپور انڈسٹریل سٹیٹ میں 400 سے ساڑھے چارسوتک کے کارخانے ہیں جس میں ہزاروں مرد وخواتین مزدور برسرروزگار ہیں لیکن عرصہ کئی ماہ سے واپڈا کی طرف سے سوتیلی ماں جیسے سلوک نے مزدوروں کو بیروزگار کرنے اور کارخانوں کو بند کرنے کا منصوبہ بنارکھا ہے کیونکہ ہفتے میں تین دن ورک پرمٹ ہوتا ہے اور واپڈا کی تحریری پرمٹ کے مطابق بجلی ایک بجے تک بند ہوگی لیکن عملاً اس طرح نہیں ہوتا بلکہ تین گھنٹے زیادہ دورانیہ تک بجلی بند رہتی ہے جس سے پہلا شفٹ متاثر ہوتا ہے جبکہ دوسرے شفٹ میں بھی کبھی کبھار بجلی کی آنکھ مچلی ہوتی رہتی ہے انہوں نے کہا کہ مجبوراً رسالپور انڈسٹریل سٹیٹ کے 2500مزدور تقریباً تین ماہ سے بیروزگاری کی چکی میں پس رہے ہیں اسی کارخانوں میں کام کرنے والی خواتین مزدوروں میں بعض ایسی خواتین ہیں جو اپنے گھر کی واحد کفیل ہوتی ہے ان کے چولہیں ٹھنڈے پڑ گئے ہیں انڈسٹریل اسٹیٹ میں کوئی لائن لاسز نہیں ریکوری بھی 100فیصد ہے تو پھر آئے روز ورک پرمٹ کی آڑ میں بجلی کیوں بند کی جاتی ہے وفاقی حکومت رسالپور انڈسٹریل اسٹیٹ میں تواتر کے ساتھ بجلی کی فراہمی کیلئے اقدامات کریں اگر 7دن کے اندر اندر واپڈا حکام نے بجلی سپلائی کا مسئلہ حل نہ کیا تو مجبوراً مردوخواتین مزدوروں کے ساتھ اپنے حقوق کیلئے سڑکوں پر نکل آئیں گے جس کی ذمہ داری واپڈا حکام پر عائد ہوگی۔

مزید : کراچی صفحہ آخر