جندول، ہائیر سیکنڈری سکول معیار میں نہم کے طلباء کو داخلہ دینے سے انکار

جندول، ہائیر سیکنڈری سکول معیار میں نہم کے طلباء کو داخلہ دینے سے انکار

جندول(نمائندہ پاکستان) گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول معیار کے داخلہ منتظمین نے مڈل سکولوں سے جماعت ہشتم پاس کرنے والے نہم کے طلبہ کو داخلہ دینے سے انکار کر دیا ہے جس کی وجہ سے طلبہ کی تعلیمی سرگرمیاں معطل ہونے کے خدشات پیدا ہو گئے ہیں جندول پریس میں اپنے مسائل میڈیاں کے سامنے رکھتے ہوئے مسلم جان ولد حبیب اللہ ساکن کس کوٹو نور امین ولد بخت زمین ساکن کس کوٹو واجب اللہ ولد صالح رحمن ساکن حنفیہ سراج ولد بشیر احمد ساکن گنڈھیری وغیرہ کا کہنا تھا کہ اپنے علاقائی سکولوں سے جماعت ہشتم پاس کرنے کے بعد انہوں نے تعلیم جاری رکھنے کیلئے گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول معیار میں داخلہ لینے کیلئے رابطہ کیا تاہم سکول منتظمین نے سکول میں طلبہ کی تعداد زیادہ بتا کر داخلہ دینے سے انکار کر دیااس سلسلہ میں پیپلز پارٹی کے علاقائی رہنماء اور سابق امیدوار ضلعی کونسل شفیع اللہ خان کا میڈیاں سے گفتگوں کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مذکورہ علاقوں سکے طلبہ کو گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول قریب پڑتا ہے اور سکول میں داخلہ مل جانا ان کا حق ہے ان کا مزید کہنا تھا کہ ایک طرف صوبائی حکومت داخلہ مہم کے نام پر اخبارات میں اشتہارات چھاپ کر اور آگاہی واک منعقد کرا کے بچوں کو سکول کی جانب راغب کرانے پر اخراجات کر رہاں ہے تو دوسری جانب تعلیم کے شائق طلبہ کو داخلہ لینے کیلئے دھر دھر کی ٹھوکرے کھانے پڑتے ہیں طلبہ اور علاقائی مشران نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا کہ مذکورہ طلبہ کی تعلیم میں حائل رکاوٹوں کو فوری طور پر دور کر کے اور سرکاری سکولوں کو وسائل فراہم کر کے طلبہ کا داخلہ یقینی بنایا جائے ورنہ بہت جلد سکول سکے طلبہ اور والدین روڈ پر ہونگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر