سعودی شہری سے شادی نے 22سالہ لڑکی کی زندگی بدل دی

سعودی شہری سے شادی نے 22سالہ لڑکی کی زندگی بدل دی
سعودی شہری سے شادی نے 22سالہ لڑکی کی زندگی بدل دی

  


مانامہ(مانیٹرنگ ڈیسک) ادھیڑعمرسعودی شہری سے شادی کرنے کے ایک ماہ بعد سعودی عرب میں مقیم عرب خاتون کو ورثے میں 67ملین سعودی ریال ( 1871219474پاکستانی روپے تقریباً ) اور ایک بنگلہ مل گیا۔

عرب اور اماراتی میڈیا کے مطابق 22سالہ غیرملکی عرب لڑکی نے امیر شخص کے پہلے سے شادی شدہ ہونے اور پہلی بیوی سے بچے ہونے کے باوجود شادی پر رضامندی ظاہر کی جس کی اندازہ ایک بلین ریال کے اثاثے تھے ۔ ادھیڑعمر معروف بزنس مین نے بھی اپنی فیملی کو بتائے بغیر صرف ایک قریبی دوست اور ایک بھائی کے تعاون سے شادی رچالی لیکن ایک ماہ بعد ہی نئی دلہن کے گھر میں دل کا دورہ پڑنے پر انتقال کرگیا۔

رپورٹ کے مطابق خاتون نے اپنے مرنیوالے خاوند کی وراثت سے حصہ مانگا تو اس کی فیملی نے شادی سے لاعلمی کی وجہ سے حصہ دینے سے انکار کردیا اور عدالت سے رجوع کرنے کی تجویزدی۔ خاندان کی طرف سے انکار ہونے کے بعد خاتون نے وراثت سے حصہ لینے کے لیے شوہر کی پہلی بیوی اور اس کے رشتہ داروں کیخلاف عدالت سے رجوع کرلیا۔

خاتون کے وکیل نے شادی سے متعلق شواہد اور فوت ہونیوالے شخص کے بھائی اور دوست کو عدالت میں پیش کردیا جس کے بعد جدہ کی عدالت نے خاتون کے حق میں فیصلہ سنادیا۔ مرنیوالے شخص کی عمر معلوم نہیں ہوسکی اور نہ یہ واضح ہوسکاکہ سعودی عرب کے کس علاقے میں رہائش پذیرتھے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس