گردوں کی غیر قانونی پیوندکاری روکنے کیلئے قانون میں خامیاں دور کی جائیں:ڈاکٹر سعید اختر

گردوں کی غیر قانونی پیوندکاری روکنے کیلئے قانون میں خامیاں دور کی ...

لاہور (جنر ل ر پو رٹر )صدر ہیومن آرگن ٹرانسپلانٹ سوسائٹی پروفیسرڈاکٹر سعید اختر نے گردوں کی غیر قانونی پیوندکاری کو گھناؤنا جرم قرار دیتے ہوئے حکومت سے استدعا کی ہے کہ اس حوالے سے قانون پر سختی سے عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے۔بتا یا گیا ہے کہ پاکستان کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ کے ہیڈ آفس میں چیف ایگزیکٹو پی کے ایل آئی پروفیسرڈاکٹر سعید اختر نے پریس کانفرنس کی،اس موقع پرممبربورڈاف گورنرز شیخ امین ایڈووکیٹ اور پروفیسر ڈاکٹر حافظ اعجازبھی موجود تھے۔ پروفیسر ڈاکٹر سعید اختر نے ای ایم ای سوسائٹی سے غیر قانونی کڈنی ٹرانسپلانٹ کرنے وا لے گروہ کی گرفتاری کو ایف آئی اے کی اچھی کاوش قرار دیتے ہوئے کہا کہ پیسوں کے لالچ میں غیر قانونی کڈنی ٹرانسپلانٹ کرنے والے ڈاکٹرز کہلانے کے مستحق نہیں۔ ہیومن آرگن ٹرانسپلانٹ کے حوالے سے موجودقانون کی خامیاں دور کرنے کے ساتھ قانون پرسختی سے عملدرامد ہونا چاہیے اوریہ گھناؤنا کاروبار جہاں کہیں بھی ہورہا ہے اس کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے۔ پی کے ایل آئی میں رواں برس دسمبرتک ٹرانسپلانٹ شروع کر دیں گے۔ بعد از مرگ جسمانی اعضاء عطیہ کرنے کے رجحان کو فروغ دینے کی اشد ضرورت ہے۔ اس سلسلے میں پی کے ایل آئی نے آگاہی پروگرام کا اغاز کر دیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر