آپریشن ردالفساد ،فورسز سے جھڑپوں میں 9دہشتتگرد ہلاک ،اہلکار شہید،کیپٹن سمیت 2زخمی

آپریشن ردالفساد ،فورسز سے جھڑپوں میں 9دہشتتگرد ہلاک ،اہلکار شہید،کیپٹن سمیت ...

پارا چنار/ٹیکسلا/شیخوپورہ/اسلام آباد /پشاور/ مردان (نمائندہ پاکستان ،بیورورپورٹ،اے این این)ملک بھر دہشتگردوں کیخلاف آپریشن رد الفساد اور انٹیلی جنس کی بنیادوں پر کارروائیاں جاری ، کرم ایجنسی میں دہشتگردوں کا فورسز پر حملہ،جوابی کارروائی میں9دہشت گرد ہلاک جبکہ دہشتگردوں کی فائرنگ سے اہلکار شہید اورکیپٹن سمیت دو زخمی ،گن شپ ہلی کاپٹروں سے بمباری میں متعدد ٹھکانے تباہ ،واہ کینٹ میں مارے گئے2 دہشتگردوں کی شناخت ہوگئی، خود کش جیکٹ برآمد،شیخو پورہ میں اسلحہ سے بھری گاڑی پکڑی گئی،ملزم فرار،اسلام آباد اور خیبرپختونخوا میں سرچ آ پریشنز کے دوران 66مشتبہ افراد گرفتار کر لئے گئے ۔تفصیلات کے مطابق پیر کی صبح کرم ایجنسی کے علاقہ خوائیدادخیل میں سکیورٹی فورسز اور دہشتگردوں کے ما بین فائرننگ کے تبادلہ میں1 سیکورٹی اہلکار شہید اور 2 زخمی ہوگئے جبکہ فورسز کی جوابی کارروائی میں کم از کم 7دہشتگردو ہلاک اور ان کے متعدد ٹھکانے تباہ ہو گئے ہیں ۔ذرائع کے مطابق گزشتہ روزساڑھے چھ بجے دہشت گردوں نے فوجی قافلے پر گھات لگاکر اس وقت حملہ کیا جب قافلہ کرم ایجنسی کے وسطی علاقے یختہ میں گشت پر مامور تھا۔بعض ذرائع کے مطابق سکیورٹی فورسز نے دہشت گردوں کے ایک ٹھکانے پر چھاپہ مارا جس کے نتیجہ میں دہشت گردوں اور سکیورٹی فورسز کے مابین فائرنگ کا تباد لہ ہوا جس میں1 سکیورٹی اہلکا ر اسماعیل خان شہید جبکہ کیپٹن غفار اور نائیک ز خمی ہوگئے ،زخمی اہلکاروں کو سی ایم ایچ ٹل منتقل کر دیا گیا ، واقعہ کے فوری بعد فورسز نے گن شپ ہیلی کاپٹروں سے خوائیداد خیل کے دیہاتوں زاوا اور اورمیگی میں دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر شیلینگ کرتے ہوئے متعدد ٹھکانوں کو تباہ کر دیا ،دہشت گرد ٹھکانے چھوڑکر پہاڑی درے میں چھپ گئے جن کی تلاش جاری ہے ۔مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ فورسز کی کارروائی میں کم از کم 7دہشتگرد ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے ہیں۔دوسری جانب راولپنڈی کے نواحی علاقے واہ کینٹ میں دو مبینہ دہشتگردوں کوہلاک کردیا گیا ہے ۔ پولیس کے مطابق آپریشن ردالفساد کے سلسلے میں واہ کینٹ میں پولیس اور رینجرز کا مشترکہ سرچ آپریشن جاری تھا کہ اس دوران ایک گھر سے پولیس پر فائرنگ کی گئی، پولیس اور رینجرز کی جوابی فائرنگ سے دو مبینہ دہشت گرد صفت اللہ اور محمد عباس ہلاک ہوگئے۔ بعد ازاں پولیس اور رینجرز نے گھر کو گھیرے میں لے کر بم ڈسپوزل سکواڈ کی ٹیموں کو موقع پر طلب کر لیا اور گھر کی تلاشی لی گئی اور گھر سے بھاری مقدار میں اسلحہ سمیت خود کش جیکٹس برآمد ہوئیں ۔ایس ایچ او یاسر ربانی کے مطابق فائرنگ سے ہلاک ہونے والے مبینہ دہشت گردوں کی شناخت عصمت اور محمد عباس کے نام سے ہوئی ہے،دونوں مبینہ دہشت گردوں کا تعلق چارسدہ اور پشاور ہے۔دریں اثناء موٹروے پولیس نے لاہور میں دہشتگردی کا ایک بڑا منصوبہ اس وقت ناکام بنا دیا ہے جب دہشتگردوں کی ایک گاڑی کو شیخو پورہ میں روک کر بھاری مقدار میں اسلحہ برآمد کر لیا گیا ہے یہ اسلحہ پشاور سے لاہور پہنچایا جا ر ہا تھا۔سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس موٹروے مسرور احمد کلاچی، ایس پی او زاہد اقبال اور پی او غلام مصطفے نے ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ موٹروے پولیس نے شیخوپورہ کے قریب کوٹ پنڈی داس کے قریب پشاور یا اسلام آباد سے لاہور جانے والی ایک مشکوک کار کو روکالیکن کار سوار ملزم نے فرار ہونے کی کوشش کی۔انھوں نے مزید بتایا کہ موٹروے پولیس نے کار کا تعاقب کیا، جس کے نتیجے میں کار ڈیوائیڈر سے ٹکرا کرالٹ گئی اور اس کے خفیہ خانوں میں چھپایا جانے والا اسلحہ اور سیمنٹ باہر نکل آیا جبکہ ملزم فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔ایس ایس پی کے مطابق کار سے برآمد کیے گئے آتشیں اسلحہ میں 222 بور، 223 بور کی 100 رائفلیں، 7پسٹل اور گولیاں شامل ہیں، جنھیں قبضے میں لے کر کارروائی شروع کردی گئی۔انھوں نے بتایا کہ کار کے خفیہ خانوں میں چھاپا جانے والا اسلحہ لاہور میں ممکنہ دہشت گردی کیلئے استعمال کیا جانا تھا۔دوسری جانب موٹروے پولیس کی اعلی کارکردگی پر ملازمین کو انعامات اور تعریفی اسناد دینے کا بھی اعلان کیا گیا ہے ۔علاوہ ازیں قانون نافذ کرنے والے اداروں نے اسلام آباد کے علاقوں جھنگی سیداں اورمحمدی کالونی سے سات مشتبہ افراد کو گرفتار کیا ہے جس میں دو افغان باشندے شامل ہیں۔ان کے قبضے سے بھاری ہتھیار اور گولہ بارود بھی برآمد ہوا ہے جبکہ پشاور اور مردان میں بھی تلاشی کی کارروائیوں کے دوران 59مشتبہ افراد کو گرفتار کیاگیا۔ان کے قبضے سے ہتھیار اور گولہ بارود بھی برآمد ہوا ہے۔

مزید : کراچی صفحہ اول