فاٹا میں ایف سی آر کا خاتمہ ناگزیر ہے ،ملک عطاء اللہ

فاٹا میں ایف سی آر کا خاتمہ ناگزیر ہے ،ملک عطاء اللہ

ٹانک (نمائندہ خصوصی)فاٹا میں انگریز دور کا دیا ہوا فرسودہ نظام ایف سی ار دورجدید کے تقاضوں سے متصادم ہے فاٹا کو مین سٹریم میں لانے سے وہاں کی عوام اور انے والی نسلوں کی روشن مستقبل سے وابستہ ہے ان خیالات کااظہار فاٹا ٹمبر اینڈ سٹیل ٹریڈرز ایسوسی ایشن کے صدر ملک عطاء اللہ جان نے پریس کلب دورہ کے موقع پر صحافیوں سے گفتگوکر دوران کیا انہوں نے کہا کہ فاٹا بلخصوص جنو بی وزیرستان میں اس نظام کے باعث مسائل میں دن بدن اضافہ ہوتا جارہاہے انکا کہناتھاکہ اکیسویں صد ی میں بھی فرسودہ نظام کے تحت بااثر افراد پولیٹیکل انتظامیہ سے سازباز کرکے عوام کا استحصال کررہے ہیں جنوبی وزیرستان میں جاری ترقیاتی منصوبے پولیٹیکل ایجنٹ اور منظور نظر افراد کے زیر اہتمام چلائے جارہے ہیں جسکے باعث چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کی وجہ سے ملکانان دونوں ہاتھو ں سے تجوریاں بھر رہے ہیں ۔انکا کہناتھاکہ جنوبی وزیرستان تحصیل مکین کے علاقہ عثمان رغزئے سڑک کی تعمیر کا ٹھیکہ ایسے افراد کو دیاگیا ہے جن کا علاقے کی تعمیر وترقی سے کوئی دلچسپی نہیں بلکہ وہ ذاتی مفادات کے تحت حکومت کے کروڑوں روپے غیر ضروری کام میں ضائع کئے جارہے ہیں ۔انہوں نے گورنر خیبر پختونخوا اورجی او سی 9ڈیو سے عثمان رغزائے میں غیر ضروری تعمیر ہونے والی سڑک پر کروڑوں روپے ضائع ہونے سے بچانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ رقم کو جنوبی وزیرستان میں پاک ارمی کے زیراہتمام جاری ترقیاتی منصوبوں پر خرچ کئے جائیں ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر