41کنال اراضی خسرہ نمبر 1846میری ذاتی ملکیت ہے :رضا اللہ

41کنال اراضی خسرہ نمبر 1846میری ذاتی ملکیت ہے :رضا اللہ

نوشہرہ(بیورورپورٹ) نوشہرہ تحصیل ناظم رضاء اللہ نے بابر قوم کی طرف سے لگائے گئے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ مزکورہ 41 کنال اراضی خسرہ نمبر1846 میری ملکیت ہے جو پشت درپشت میرے اباؤ اجداد کے نام سے میرے نام منتقل ہوئی ہے میں لینڈ مافیا نہیں بلکہ ا س اراضی کا اصل مالک ہوں اور عدالیہ نے ان کے حق میں نہیں بلکہ میرے حق میں فیصلہ دیا ہے اگر ان کو عدالت کی طرف سے ڈگری ملی ہویا اس اراضی کے ملکیتی کاغذات ہوتو میں تحصیل نظامت سے مستعفیٰ ہوجاؤں گا مذکورہ زمین قبرستان سے کافی فاصلے پر ہے لیکن بابر قوم قبرستان کی آڑ میں میری زمین ہتھیانا چاہتے ہیں ان خیالات کااظہار انہوں نے نوشہرہ پریس کلب میں ردعملی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیااس موقع پر حاجی سید حسن ، پرویز اور اصغر بابر بھی موجود تھے تحصیل ناظم نے کہا کہ میں لینڈ مافیا نہیں بلکہ اپنی ملکیتی اراضی پر چاردیواری تعمیر کررہا تھا لیکن بابر قوم کے سو سے ایک سو پچاس مسلح افراد تعمیراتی کام کے دوران ہم پر حملہ آور ہوئے اور زبردستی میری اراضی پر تعمیرکردہ چاردیواری مسمار کردی انہو ں نے کہا کہ 1928 سے لیکر اب تک محکمہ مال کے ریکارڈ میں خسرہ نمبر1846 ، 41کنال اراضی میرے اباؤ اجداد سے پشت درپشت ہماری ملکیت چلی آرہی ہے لیکن یہ لوگ مجھ سے قبرستان کی آڑ میں میری ملکیتی اراضی ہتھیا کر قبضہ کرنا چاہتے ہیں کیونکہ ہائی کورٹ، سیشن کورٹ نے اس اراضی کے بارے میں میرے حق میں فیصلہ دیا ہے جس کا ثبوت کاغذات کی صورت میں میرے پاس موجود ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر