پی ٹی آئی پر الزامات لگانے والوں کو شرم آنی چاہئے ،ڈاکٹر امجد علی

پی ٹی آئی پر الزامات لگانے والوں کو شرم آنی چاہئے ،ڈاکٹر امجد علی

پشاور( سٹاف رپورٹر )وزیراعلیٰ کے معاؤن خصوصی برائے ہاؤسنگ ڈاکٹرامجد نے کہا ہے کہ عوامی نیشنل پارٹی کو پختونوں کی تذلیل کرانے پر ایوارڈ دیناچاہئے ،اے این پی دور کے حکومت میں پختونوں کے باپردہ خواتین ہجرت کرنے پر مجبور تھے ، اوران کو IDPsبنانے اورتذلیل کرنے میں اے این پی نے کوئی کسر نہیں چھوڑی ۔ پی ٹی آئی پر الزام لگانے والوں کو شرم آنی چاہئے ، عوام کا پیسہ ہڑپ کرنے میں عوامی نیشنل پارٹی نے بھی کوئی کس نہیں چھوڑی ، ان خیالات کااظہار انہوں نے دیولئی میں سولر سسٹم تنصیب کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا، واضح رہے کہ گاؤں دیولئی کیلئے ایک کروڑروپے کاسولر سسٹم نصب کیا گیا جس سے عوام کادیرینہ مسئلہ حل ہوگیا۔ اس سولر سسٹم سے بیس ہزار آبادی کو بغیر بجلی کے پانی کی فراہمی رمضان میں شروع ہوجائینگے ، پاکستان تحریک انصاف حقیقی معنوں میں تبدیلی لیکر آئیں ، ڈاکٹرامجد کادیولئی ٹیوب ویل کے سولرسسٹم کاافتتاح ، افتتاح میں سیکڑوں لوگوں نے شرکت کی اور ڈاکٹرامجد کا شکریہ اداکیا۔ کہ دیولی میں کروڑوں روپے کے ترقیاتی کام تحریک انصاف سے پہلے کسی بھی حکومت نے نہیں کرائی، ڈاکٹرامجد نے اپنے خطاب میں کہا کہ مخالفین کے نیندیں حرام ہوچکی ہے ، اب وہ حواس باختہ ہوچکاہے۔ جب بھی پی کے 82میں کوئی نیا کام شروع ہوتاہے۔ وہ کہتے ہیں کہ یہ ہمارے منصوبے تھے، ہم بھی کہتے ہیں کہ انہوں نے خواب میں یہ منصوبے بنائے تھے، لیکن تحریک انصاف حقیقی معنوں میں پی کے 82کو ترقی دے رہے ہیں اے این پی والے ابھی تک خواب غفلت میں مبتلا ہے ، ان کو ابھی تک ہوش نہیں آیا کہ اے این پی کی حکومت کو ختم ہوتی چارسال گزرگئے ہیں ۔ اور 4سال پہلے صوبے کے جو حالات تھے سب کو معلوم ہے۔ ان کے حکومت میں پختون قوم کے جتنے بے عزتی ہوئی تاریخ میں کسی دشمن نے بھی پختون قوم کو اتنا بے عزت اورذلیل نہیں کیاتھا۔ ان کے دور حکومت میں پختون ماؤں اوربہنوں اوربچوں کے جتنے تذلیل ہوئی اس کے نظیر نہیں ملتی ۔ ان کے حکومت میں جتنی کرپشن ہوئی جتنے لوٹ مار ہوئی ، ان کے ایم پی اے نے جتنی کمیشن کھائی، لوٹ مار کی، نوکریوں پربولیاں لگی ۔ یتیموں اور بیواؤں کے ذکواۃ کے رقوم ہڑ پ ہوئی ، یہ اے این پی حکومت کی کارنامے ہیں ، صوبے میں امن وامان کا جو حال تھا۔ سب کوپتہ ہے کہ اے این پی کے ایم پی اے اورلیڈر اپنی گھروں میں بھی نہیں آسکتے تھے ۔ تودوسروں کاکیا حال تھا۔ آئے روز بم بلاسٹ دھماکے روز کامعمول تھا۔ اے این پی کے ورکروں کے گھروں میں ابھی تک ترقیاتوں کاموں کے سیمنٹ ابھی تک پڑے ہوئے ہیں ، اورآج جب کے پی ٹی آئی کے حکومت میں یہ اپنی گھروں اورحجروں میں آگئے اور پی ٹی آئی کی بدولت عوام میں بلاجھجک جارہی ہے ، تو کس منہ سے پی ٹی آئی پرالزام لگاتے ہیں ، ان کو شرم بھی نہیں آتے ، اورآ ج اپ کے اس حلقے سے اے این پی کے لیڈر اورسابقہ ایم پی اے لوگون کو کہتاہے۔کہ ان کے پاس فنڈز نہیں ہے لیکن لوگ باشعور ہے۔ اگر ہمارے پاس فنڈ نہیں توپی کے82میں اربوں روپے کے کام جاری ہے ، تو یہ کس کافنڈ ہے۔ اور لوگوں کو پتہ ہے کہ ان کے گھر کے سامنے دیولئی شاہ ڈھیرئی روڈ پر کروڑوں کاکام جاری ہے۔ جو ان کے لئے شرم کا مقام ہے ۔ کہ انہوں نے اپنی دورحکومت میں اس سڑک پر ایک روپے کاکام نہیں کیاتھا۔ اوراب پروپیگنڈے کروارہی ہے لیکن عوام ان کے منفی پروپیگنڈوں کو بخوبی جانتے ہیں ۔ کہ اپنی حکومت میں لوٹ مار اور چوری کے علاوہ کچھ کیا نہیں اور اب جب پی ٹی آئی عوام کو ترقی دے رہی ہے ، تو یہ پروپیگنڈہ کرواہی ہے ۔ اورسابقہ ایم پی اے کاکہناہے۔ کہ پی ٹی آئی ، ایم پی اے کابنی گالہ میں عزت نہیں ہوتی ۔ عزت تو یہ ہے کہ پی ٹی آئی کاہرورکرز بلاجھجک بنی گالہ جاتے ہیں اور خان صاحب کیساتھ بیٹھتے ہیں۔ اور پی کے 82کے ہر Activeورکر بنی گالہ کاوزٹ کیاہے ۔ لیکن میں ان سے پوچھتا ہوں کہ اے این پی کے کس ورکر نے ولی باغ جاکر اسفندیارکے گھرکے اندر کاوزٹ کیاہے۔ اے این پی کے سابقہ ایم پی ایز کانہیں اورالحمداللہ پی ٹی آئی کے غریب عوام کوٹکٹیں دیں اور اے این پی خان کو ٹکٹ دیتے ہیں پی ٹی آئی کاایم پی اے منسٹر ہے ، اور اے این پی کا ایم پی اے پارلیمانی سیکرٹری بھی نہیں تھا۔ تو عزت کس کی ہے اے این پی تو خان خوانین کے تحتٖ کے پارٹی ہے غریب عوام کیلئے اے این پی میں کوئی عزت نہیں۔ اورذلیل کیا۔ اے این پی میں صرف خان خوانین کے عزت ہے۔ غریب ورکر صرف نعروں کیلئے ہے انشاء اللہ مخالفین پروپیگنڈے کرتے رہینگے لیکن ہم پورے صوبے اور خصوصاً پی کے 82 کو ترقی دینگے اورترقی کا یہ سفر جاری وساری رہیگا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر