کوہاٹ میں صفائی کی ناقص صورتحال ،گندگی کے ڈھیر

کوہاٹ میں صفائی کی ناقص صورتحال ،گندگی کے ڈھیر

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) تحصیل کونسلر کوھاٹ جاوید نور نے کوھاٹ میں صفائی کی ناقص صورت حال پر انتہائی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے ڈبلیو ایس ایس سی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ صفائی کے لیے مزید عملہ بھرتی کر کے اور اس سلسلے میں درکار تمام مشینری فوری طور پر فراہم کرے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے جاوید نور کا کہنا تھا کہ ڈبلیو ایس ایس سی کے قیام سے عوام نے جو توقعات وابستہ کر رکھی تھیں کمپنی اس معیار پر پوری نہیں اتری اس نے نہ کوئی اضافی عملہ بھرتی کیا اور نہ نئے ٹریکٹر‘ ٹرالیاں‘ گاڑیاں‘ سوزوکی یا دیگر مشینری کا انتظام کیا ہے بلکہ ٹی ایم اے کے اسی عملے کو استعمال میں لایا جا رہا ہے جس سے شہری علاقوں اور بازاروں میں صفائی کی صورت حال میں کوئی بہتری نہیں آئی تحصیل کونسلر کا کہنا تھا کہ عوامی شکایات پر میں نے رات 9 بجے ڈبلیو ایس سی سی کے چیف ایگزیکٹیو کو کال کی تو انہوں نے جواب میں کہا کہ یہ کونسا ٹائم ہے میں نے اسے کہا کہ یہ تو 9 بجے ہیں میں عوام کے مطالبہ صفائی اور پانی پر رات کے 2 بجے بھی فون کروں گا کیوں کہ آپ ماہانہ 5 لاکھ تنخوا لیتے ہیں اور میں عوامی نمائندہ ہوں آپ تنخواہ کے عوض عوام کو جواب دہ ہیں انہوں نے کہا کہ ٹی ایم اے اپنے فنڈ سے ماہانہ لاکھوں روپے کمپنی کو ادا کر رہی ہے مگر کمپنی کے پاس کوئی سہولیات نہیں کمپنی نے سینیٹری انسپکٹر محمد سہیل کو تمام کوھاٹ کی صفائی کی ذمہ داری دی ہے جو محدود وسائل کے باوجود نہایت محنت سے فرائض انجام دے رہا ہے اور عوامی شکایات پر فوری ایکشن لیتا ہے مگر اتنے وسیع علاقہ کے لیے ایک انسپکٹر کی تعیناتی کوئی معنی نہیں رکھتی کمپنی کو مزید انسپکٹر رکھنے ہوں گے تاکہ کمپنی کا مقصد بھی پورا ہو اور عوام بھی صفائی سے مطمئن ہوں انہوں نے کہا کہ کمپنی کا فرض ہے کہ وہ گرمی کے موسم میں پانی کی شہریوں کو فراہمی یقینی بنائے اور تمام ٹیوب ویلز کو سولر انرجی پر منتقل کیا جائے تاکہ پانی کی فراہمی میں بجلی کی لوڈشیڈنگ حائل نہ ہو۔

مزید : پشاورصفحہ آخر