مشترکہ مفادات کونسل کا اعلامیہ جاری،کچھی کینال کرپشن میں ملوث افراد کیخلاف کارروائی کا فیصلہ

مشترکہ مفادات کونسل کا اعلامیہ جاری،کچھی کینال کرپشن میں ملوث افراد کیخلاف ...
مشترکہ مفادات کونسل کا اعلامیہ جاری،کچھی کینال کرپشن میں ملوث افراد کیخلاف کارروائی کا فیصلہ

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لان)وزیراعظم میاں نواز شریف کی زیر صدارت ہونے والے مشترکہ مفادات کونسل کا اعلامیہ جاری کردیا گیا ہے اور کچھی کینال کرپشن میں ملوث افراد کیخلاف کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کی زیر صدارت مشترکہ مفادات کونسل کا 31واں اجلاس ہواجس میں  و زیراعظم نے چاروں وزرائے اعلیٰ کو تحفظات کے ازالے کی یقین دہانی کرائی ہے جبکہ کونسل نے نیشنل فلڈ پروٹیکشن پلان فیز 4کی منظوری دیدی ہے۔

 اجلاس میں میں 12 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا جبکہ اجلاس میں قومی واٹر پالیسی پر وزرائے اعلیٰ کی کمیٹی قائم کردی گئی ہے۔ذرائع کے مطابق خیبر پختونخوا نے بجلی کے منافع کا معاملہ اٹھایا،وزیراعلیٰ سندھ نے گیس فراہمی میں کمی اور معطلی کا معاملہ اٹھایا،صوبوں نے پانی کی منصفانہ تقسیم کا مطالبہ کیا۔

’کیا آپ کو معلوم ہے عراق میں داعش کے جنگجوﺅں سے پکڑا جانے والا اسلحہ سب سے پہلے اس ایک خاتون کو دکھایا جاتا ہے تاکہ وہ اس سے۔۔۔‘ یہ خاتون اسلحے کا کیا کرتی ہے؟ جواب ایسا کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا

نواز شریف نے وزرائے اعلیٰ کے تحفظات کے ازالے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ کسی صوبے کے ساتھ زیادتی نہیں ہوگی،گیس اور پانی کے کوٹے پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے گاجبکہ وزیراعظم نے کراچی کو اضافی پانی سے متعلق اقدامات کرنے کی بھی ہدایت کی ۔

اجلاس میں سیلابی صورتحال سے نمٹنے کیلئے وفاق اور صوبوں کا مشترکہ کام کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور کچھی کینال کی تحقیقاتی رپورٹ اجلاس میں پیش کی گئی،سیلاب سے بچائو کے لئے 177ارب روپے کے فنڈز کی منظوری دی گئی جو کہ وفاق اور صوبے فراہم کریں گے۔وزیراعظم نے صوبوں میں جاری منصوبے مقررہ مدت اور لاگت میں مکمل کرنے  کی ہدایت کی جبکہ اجلاس کے شرکا  نے چھٹی مردم  شماری پر اطمینان کا اظہار بھی کیا۔

مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس میں چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ کے علاوہ وفاقی وزیرخزانہ،پانی و بجلی،سیفران،منصوبہ بندی و ترقی اور پٹرولیم کے وزراء نے شرکت کی جبکہ سمندر پار پاکستانیوں،مذہبی امور،دفاعی پیداوار اور ماحولیاتی تبدیلی کے وزرائبھی شریک ہیں۔واضح رہے کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد مشترکا مفادات کونسل کا اجلاس ہر 90 روز میں ہونالازم ہے اور آج کا اجلاس 5 ماہ بعد ہوا ہے۔

’مجھے کینسر ہے اور جلد مرنے والی ہوں لیکن چاہتی ہوں جانے سے پہلے اپنے شوہر کو یہ ایک کام سکھا جاﺅں تاکہ اسے میری موت کے بعد زندگی میں بیوی کی کمی محسوس نہ ہو‘ خاتون نے ایسی بات کہہ دی ہر کسی کا منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

مزید : قومی /اہم خبریں