برطانیہ میں پاکستانی شہری نے شہریت حاصل کرنے کیلئے برطانوی لڑکی سے شادی کرلی لیکن پھر شادی کے بعد اپنی دلہن کے ساتھ ایسا شرمناک ترین کام کردیا کہ جان کر ہر لڑکی کانپ اٹھے

برطانیہ میں پاکستانی شہری نے شہریت حاصل کرنے کیلئے برطانوی لڑکی سے شادی کرلی ...
برطانیہ میں پاکستانی شہری نے شہریت حاصل کرنے کیلئے برطانوی لڑکی سے شادی کرلی لیکن پھر شادی کے بعد اپنی دلہن کے ساتھ ایسا شرمناک ترین کام کردیا کہ جان کر ہر لڑکی کانپ اٹھے

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) روزگار کے لیے یورپی ممالک جانے والے پاکستانی شہریت کے لیے وہاں کی خواتین سے شادیاں رچا لیتے ہیں اور پھر ایسی بدخصلت کا مظاہرہ کرتے ہیں کہ ملک کا نام بھی بدنام کر دیتے ہیں۔ ایسا ہی کچھ اس پاکستانی نوجوان نے برطانیہ میں کیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 21سالہ محسن اکرم نے برطانوی ویزے کے لالچ میں 20سالہ پاکستانی نژاد برطانوی لڑکی مریم حسین سے شادی کر لی لیکن جب اس کو سیڑھی بنا کر برطانیہ پہنچ گیا تو اس پر وحشیانہ تشدد کرنے لگا۔

’مجھے کینسر ہے اور جلد مرنے والی ہوں لیکن چاہتی ہوں جانے سے پہلے اپنے شوہر کو یہ ایک کام سکھا جاﺅں تاکہ اسے میری موت کے بعد زندگی میں بیوی کی کمی محسوس نہ ہو‘ خاتون نے ایسی بات کہہ دی ہر کسی کا منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

رپورٹ کے مطابق ایک روز کھانا بنانے میں تاخیر ہونے پر محسن نے مریم کو ہتھوڑے سے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا جس پر اس نے پولیس کو اطلاع کر دی۔ پولیس نے ملزم کوکارڈف کراﺅن کورٹ میں پیش کر دیا جہاں سے اسے 15ماہ قید کی سزا سنا دی گئی ہے تاہم عدالت نے مریم کے وکیل کی ملزم کو ملک بدر کرنے کی درخواست مسترد کر دی۔ رپورٹ کے مطابق محسن اور مریم کا رابطہ فیس بک پر ہوا تھا اور اس نے برطانوی ویزہ حاصل کرنے کے لیے مریم سے شادی کر لی لیکن برطانیہ پہنچتے ہی اس پر تشدد شروع کر دیا۔ وہ اسے طعنے دیتا تھا کہ ’تم اچھی بیوی نہیں ہو۔‘ اس نے مریم کو گھر سے نکلنے اور موبائل فون اور انٹرنیٹ استعمال کرنے سے بھی منع کر دیا تھا۔ واضح رہے کہ دونوں کا 4ماہ کا بیٹا بھی ہے۔

مزید : برطانیہ