کورونا سے متاثر ڈاکٹر اور ہیلتھ ورکر

کورونا سے متاثر ڈاکٹر اور ہیلتھ ورکر

  

وزارتِ قومی صحت کے اعداد و شمار کے مطابق ملک بھر میں 216ڈاکٹروں سمیت444ہیلتھ ورکر کورونا وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ گذشتہ چوبیس گھنٹوں میں چھ ہیلتھ ورکرز میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے، جن میں اسلام آباد کے پمز ہسپتال کا بے ہوشی کا ایک ڈاکٹر بھی شامل ہے۔ متاثرہ ڈاکٹروں کا ملک بھر کے مختلف ہسپتالوں اور آئسولیشن سنٹروں میں علاج کیا جا رہا ہے…… یہ معلوم کرنے کی ضرورت ہے کہ ڈاکٹروں اور ہیلتھ ورکروں کی اتنی بڑی تعداد کورونا وائرس سے کیونکر متاثر ہو گئی، کیا اِن ڈاکٹروں کے پاس حفاظتی کٹس نہیں تھیں یا انہوں نے وہ اقدامات نہیں اٹھائے جو کورونا وائرس کے متاثرہ مریضوں کے علاج سے پہلے اٹھانا ضروری تھے۔ملک بھر میں ڈاکٹروں کی کئی تنظیمیں احتجاج کر رہی ہیں کہ اُن کے پاس پوری حفاظتی کٹس نہیں ہیں اِس لئے وہ خود متاثر ہو سکتے ہیں،لیکن حکومت مسلسل یہ موقف اختیار کرتی رہی ہے کہ ایسا نہیں،صرف ڈاکٹر سیاست کر رہے ہیں، لیکن متاثرہ ڈاکٹروں اور ہیلتھ ورکروں کی اتنی بڑی تعداد سے اندازہ ہوتا ہے کہ کہیں نہ کہیں کوئی خرابی ضرور ہے، ملک کے مختلف حصوں میں تین ڈاکٹروں سمیت آٹھ ہیلتھ ورکر شہید بھی ہو چکے ہیں،اِس لئے ڈاکٹروں کو نہ صرف حفاظتی تدابیر اختیار کرنی چاہئیں،بلکہ حکومت کو حفاظتی کٹس کی شکایات کا بھی جائزہ لے کر یہ کمی دور کرنی چاہئے تاکہ ڈاکٹر اور عملہ اپنی تمام تر توجہ مریضوں کے علاج معالجے پر مرکوز کر سکے۔

مزید :

رائے -اداریہ -