بابر علی ممتاز امریکن اکیڈمی آف آرٹس اینڈ سائنسز کی کلاس کیلئے منتخب

بابر علی ممتاز امریکن اکیڈمی آف آرٹس اینڈ سائنسز کی کلاس کیلئے منتخب

  

لاہور(پ ر)لمز کے بانی پرو چانسلر اور ورلڈ وائلڈ لائف فنڈ کے سابق صدر سید بابر علی رواں سال ممتاز امریکن اکیڈمی آف آرٹس اینڈ سائنسز کی کلاس کے لئے منتخب ہو گئے ہیں۔ تعلیم کے لئے ان کی بے مثال خدمات کے اعتراف میں پاکستان میں عوامی فلاح اور معاشرتی مساوات کو فروغ دینے کے لئے بابر علی کو بزنس، کارپوریٹ اورفیلان تھروپک لیڈر شپ کیٹیگری میں تسلیم کیا گیا۔ انہوں نے مختلف شعبوں، مضامین اور جغرافیہ سے تعلق رکھنے والے 270 سے زیادہ جدت کاروں اور رہنماؤں کے ایک قابل قدر گروہ میں شمولیت اختیار کی1780ء میں قائم ہونے والی اکیڈمی دنیا کی انتہائی قابل احترام اعزازی سوسائٹیوں میں سے ایک ہے جو اپنے اعلیٰ ممبران اور کارکردگی کا لوہا منوانے کے حوالے سے مشہور ہے۔ لمز کے ریکٹر شاہد حسین نے کہا "کہ بابر علی اپنے پاس آنے والے افراد کو اپنا وقت اور مشورہ دینے کے لئے حیرت انگیز فراخدلی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی نوجوانوں کی بہتری کے لئے نئے اقدامات کی کوششوں کے لئے میں نے اس سے قبل کسی کو اتنا پرجوش نہیں دیکھا"۔ بابر علی 37 بین الاقوامی اعزازی ممبران میں سے ایک ہیں اور انہوں نے 22 ممالک سے سائنسدانوں، ماہرین تعلیم اور فنکاروں کی فہرست میں شمولیت اختیار کر رکھی ہے۔ وہ پاکستان کے نوبل انعام یافتہ سائنسدان ڈاکٹر عبدالسلام کی پیروی کرتے ہیں جو 1971ء میں منتخب ہوئے تھے،۔ لمز کے وائس چانسلر ڈاکٹر ارشد احمد نے کہا" کہ سید بابر علی قومی اثاثہ ہیں جو عاجزی، دیانتداری اور فراخدلی کا مظہر ہیں۔

وہ آنے والی بہت سی نسلوں کے لئے بھی ایک رول ماڈل رہیں گے"۔سید بابر علی کی بلڈنگ مینجمنٹ کپسٹی میں ابتدائی کاوشیں اور پاکستان میں اعلیٰ تعلیم کی بہتری کے لئے ایک عظیم خواب ہماری قوم پر دیرپا اثرات مرتب کرنے کیلئے انتہائی مقبول ہیں۔ اکیڈمی کی جانب سے بابر علی کی خدمات کا اعتراف ان کی میراث کے لئے ایک بہترین خراج تحسین ہے۔

سید بابر علی نے کہا "کہ مجھے امریکن اکیڈمی آف آرٹس اینڈ سائنسز کا حصہ بننے پر دلی خوشی ہے جو عوام کی فلاح اور عالمی برادری کے استحکام کے لئے وقف ہے۔ یہ ایک بہت بڑا اعزاز ہے"۔ بطور کاروباری شخصیت، سرپرست، لیڈر اور انسان دوست کی حیثیت سے سید بابر علی کی غیر معمولی کامیابیوں نے پاکستان بھر میں مضبوط نقش چھوڑے ہیں۔ وہ 250 نوبل اینڈ پولیٹزر پرائز کے فاتحین میں سے ہیں جن میں بینجمن فرینکلن، رالف والڈو ایمرسن، البرٹ آئن سٹائن، مارٹن لوتھر کنگ جونیئر اور حال ہی میں نیلسن منڈیلا شامل ہیں جو اکیڈمی کی 240 سالہ تاریخ کا حصہ بنے۔

مزید :

کامرس -