حکمران ٹولہ عوام لڑاؤ حکومت کرو کی پالیسی پرعمل پیرا، 18ویں ترمیم پر کوئی بھی سودے بازی نامنظور، ذیشان اختر

حکمران ٹولہ عوام لڑاؤ حکومت کرو کی پالیسی پرعمل پیرا، 18ویں ترمیم پر کوئی بھی ...

  

بہاول پور(بیورورپورٹ )نائب امیر صوبہ جماعت اسلامی جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر نے کہا ہے کہ کورونا صورتحال میں حکومتی نااہلی کو چھپانے اور آٹا چینی اسکینڈل سے عوام کی توجہ ہٹانے کیلئے 18ویں ترمیم میں ردوبدل(بقیہ نمبر40صفحہ6پر)

کا شوشہ چھوڑاگیا ہے، کوئی بھی قانون غلط نہیں ہوتا مگر ان کے استعمال کرنے کی بروقت صلاحیت ہونی چاہئے،حکمران ٹولہ”عوام لڑاؤ،حکومت کرو“ کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں،18ویں ترمیم پر کوئی سودے بازی نہیں کی جائے گی، اصل مسئلہ حکومتی نیت اور ویژن کا ہے، اربوں روپے کے پیکیج میں نجی تعلیمی اداروں کو نظرانداز کرنے سے حکومت کی تعلیمی پالیسی اور ویژن کا بخوبی اندازہ لگایا جاسکتا ہے،کوروناوائرس کی وجہ سے نوجوان نسل کا مستقبل داؤ پر لگا ہوا ہے مگر حکومت نے اب تک آن لائن تعلیمی پالیسی کا واضح اعلان نہیں کیا ہے۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ تمام ٹیکس ایک سال کیلئے معاف، اساتذہ کیلئے خصوصی پیکیج کا اعلان، یکساں نصاب تعلیم جو لادینیت کی بنیاد پر بنایا جارہا ہے اس کو اسلامی نصاب تعلیم کے مطابق بنایا جائے، پرائیوٹ اسکولز مالکان اور اساتذہ کو حراساں کرنا بند کیا جائے، پرائیوٹ اسکولز ملک میں 80%تعلیم کی ضرورت کو پورا کررہے ہیں، موجودہ صورتحال میں حکومت نے اربوں روپے پیکیج کا اعلان تو کیا مگر نجی اسکولوں کو مکمل طور پر نظرانداز کردیاگیا جو انتہائی تشویش ناک بات ہے۔ ملک کی ترقی وتعلیم کے فروغ کیلئے پرائیوٹ تعلیمی اداروں کا کردار کلیدی ہے۔

نامنظور

مزید :

ملتان صفحہ آخر -