پاکستان میں مزید 5ہزار افراد میں کورونا وائرس کی موجودگی کا خدشہ

پاکستان میں مزید 5ہزار افراد میں کورونا وائرس کی موجودگی کا خدشہ
پاکستان میں مزید 5ہزار افراد میں کورونا وائرس کی موجودگی کا خدشہ

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)حکومت نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ملک بھرمیں پانچ ہزار سے زائد ایسے افراد موجود ہیں جن کے کورونا وائرس  کی موجودگی کا کا خدشہ ہے۔

ڈان نیوزکے مطابق اس خطرے کی نشاندہی حکومت کے ٹریس اینڈ ٹریکنگ سسٹم نے ظاہر کی ہے۔وزیراعظم نے گزشتہ ہفتے بتایا تھا کہ حکومت کورونا وائرس کے کیسز کو ٹریک کرنے کیلئے جس سسٹم کو استعمال کررہی ہے وہ انٹیلی جنس ایجنسیز کی جانب سے دہشت گردوں کو پکڑنے کیلئے تیارکیاگیا جواب  کورونا کیخلاف جنگ میں بھی کام آرہا ہے۔

اس حوالے سے نیشنل انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے سربراہ شباہت شاہ کہتے ہیں کہ حکومت کو پانچ ہزار کے قریب افراد کے رابطوں کی تفصیلات حکومت اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو دی گئی ہیں جو مذکورہ افراد تک پہنچ کر نظام کی درستگی کی بھی تصدیق کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ان افراد میں مریض اور وہ افراد شامل ہیں جن کا مریضوں سے رابطہ ہوسکتا ہے۔

ڈان سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ سسٹم خطرے کا شکار افراد کی نقل حرکت معلوم کرنے کے لیے ٹیلی کام ڈیٹا کا استعمال کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ چونکہ سیل ٹاور ٹریسنگ پر مبنی لوکیشن کا نصف قطر لوگوں کو ٹریس کرنے کے لیے بہت وسیع ہے لہذا ہم مزید درستگی کے لیے نصف قطر کو کم کرنے کے لیے سسٹم کے الگورتھم کا استعمال کرنا چاہتے ہیں۔

شباہت شاہ نے کہا کہ پاکستان کے شہری علاقوں میں نصف قطر 100 میٹر اور دیہی علاقوں میں 200میٹر ہے۔

ٹیلی کام پرووائیڈرز، سیل سائٹ لوکیشن انفارمیشن(سی ایس ایل آئی) کے استعمال سے موبائل فونز کے لوکیشن ڈیٹا جمع کرتے ہیں، جو اس پرمبنی ہوتا ہے کہ کس سیل ٹاور سے کوئی فون اور کب منسلک ہوا۔

چونکہ سیل ٹاورز کے مابین موبائل ڈیوائسز کی منتقلی بھی ہوتی ہے اس لیے نیٹ ورک وقت اور لوکیشن کے علاوہ (کال ڈیٹیل ریکارڈز (سی ڈی آرز کی شکل میں) کالز، ایس ایم ایس اور ڈیٹا کا استعمال بھی ریکارڈ کرلیتا ہے۔

شباہت شاہ نے ڈان کو بتایا کہ ایک مرتبہ تمام معلومات ٹریک سینٹر پر موصول ہوجائیں تو صرف ان افراد کا پتہ لگانے اور قرنطینہ کرنے کے لیے غیر شناختی تفصیلات ( جیسا کہ فون نمبر) صوبائی اور ضلعی حکام کو دی جاتی ہیں۔

مزید :

قومی -کورونا وائرس -