”یہ تصویر ایک بند کمرے میں لی گئی ،اسے سوشل میڈ یا پر لانا عالم دین کی توہین ہے “معروف عالم دین انجینئرمحمد علی اس تصویر کو دیکھ کر غصے میں آگئے

”یہ تصویر ایک بند کمرے میں لی گئی ،اسے سوشل میڈ یا پر لانا عالم دین کی توہین ...
”یہ تصویر ایک بند کمرے میں لی گئی ،اسے سوشل میڈ یا پر لانا عالم دین کی توہین ہے “معروف عالم دین انجینئرمحمد علی اس تصویر کو دیکھ کر غصے میں آگئے

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )معروف عالم دین انجینئر محمد علی مرزا نے کہا کہ مولانا طارق جمیل صاحب اندر سے شریف انسان ہے اور ان کی شرافت ان کی کمزوری ہے جس کالوگ ناجائز فائدہ اٹھاتے ہیں اور اس کے بعد بھی ان کو اندازہ نہیں ہوتا کہ اس طرح معاملہ خراب ہوگیا ہے جس کی تازہ مثال یہ ہے کرونا وائرس جب پھیلا تو مولانا صاحب کو وزیراعظم نے ملاقات کیلئے بلایا جس میں ایک تصویر میں دونوں سماجی دوری کا پیغام دیتے ہوئے سینے پر ہاتھ رکھتے ہیں جبکہ دوسری تصویر جس کو سوشل میڈیا پر ڈالنے کی ضرورت تک نہیں تھی اس تصویر میں مولانا صاحب ہاتھ ملانے کیلئے آگے بڑھتے ہیں جبکہ وزیراعظم سینے پر ہاتھ رکھ لیتے یہ بتانے کیلئے کہ کرونا کی وجہ سے ہاتھ ملانا منع ہے یہ ایک ایسے عالم دین کی توہین ہے جس کے کروڑوں چاہنے والے ہیں، یہ تصویر ایک بند کمرے میں لی گئی، اس کے باوجود تصویر ڈالی گئی اور مولانا صاحب کواندازہ بھی نہیں ہوا جب میں نے فون کرکے غصہ کیا تو انہوں نے کہا آئندہ احتیاط کروں گا۔

مزید :

قومی -