امریکی مسلمانوں کی جاسوسی ختم کرکے ان کے آئینی حقوق کی پامالی بند کی جائے

امریکی مسلمانوں کی جاسوسی ختم کرکے ان کے آئینی حقوق کی پامالی بند کی جائے

واشنگٹن(اظہرزمان،بیوروچیف)امریکہ کی120 سے زائد تنظیموں نے پورے ملک اور خصوصاً نیویارک میں امریکی مسلمانوں کی جاسوسی کرنے کے خلاف امریکی محکمہ انصاف کو ایک مشترکہ خط لکھا ہے،ساﺅتھ ایشین امریکینز لیڈنگ ٹوگیدر(سالٹ) نے دیگر تنظیموں کے ہمراہ لکھے جانے والے اپنے مشترکہ مراسلے میں اوبامہ انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ پولیس کے محکمے کو مسلمانوں کی باوجہ اور بلاجواز جاسوسی کرکے ان کے شہری اور آئینی حقوق کی پامالی کرنے سے منع کیا جائے۔مراسلے میں خصوصی طور پر نیویارک سٹی پولیس ڈیپارٹمنٹ کی کارروائیوں پر احتجاج کیا گیا ہے اور اس کے خلاف تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے ،مراسلے میں ذکر کیاگیا ہے کہ اخباری اطلاعات کے مطابق نیویارک پولیس کئی سالوں سے مسلم امریکن کمیونٹی کی جاسوسی کرتی رہی ہے اور ایسا پروگرام ترتیب دیا گیا جس کے تحت نیویارک سٹی ایریا کی مساجد اور نمازیوں کی بغیر وارنٹ اور کسی کے علم میں لائے بغیر جاسوسی کی جاتی رہی ہے،امریکن مسلمانوں کی ان نمائندہ تنظیموں نے اوبامہ انتظامیہ پر زور دیا ہے کہ وہ ان کے ساتھ امتیازی سلوک فورا بند کرائے اور ان کے ساتھ وہی سلوک کرے جو دیگر ذمہ دار امریکی شہریوں کے ساتھ کیا جاتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر