امریکہ باز نہیں آتا تو حکومت ڈرون گرانے کا حکم دے: سیاسی رہنما

امریکہ باز نہیں آتا تو حکومت ڈرون گرانے کا حکم دے: سیاسی رہنما
امریکہ باز نہیں آتا تو حکومت ڈرون گرانے کا حکم دے: سیاسی رہنما

  

لاہور(جنرل رپورٹر+سٹاف رپورٹر+وقائع نگار) ڈرون حملے کے نتیجہ میں ہلاکت  مذاکرات کے لئے شدید جھٹکا ہوگا۔طالبان سے کامیا ب مذاکرات کا راستہ ہی امن کی طرف جاتا ہے بے گناہوں کا خون بہنا بند ہونا چاہیے پاکستان دوسروں کی جنگ میں قیمت ادا کرچکا ہے مذاکرات کے دوران ڈرون حملے ہوئے تو تحریک انصاف نیٹوسپلائی بند کرے گی اس امر کا اظہار مختلف جماعتوں کے رہنماﺅں نے اپنے ردعمل میں کیا ۔اس حوالے سے مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما اور وفاقی وزیر احسن اقبال نے کہا کہ طالبان سے بامقصد اورکامیاب مذکرات کررہے ہیں جس کا آغاز کردیا ہے ڈرون حملے مسلے کاحل نہیں ہے پاکستا ن میں ڈرون حملوں کی اجازت نہیں دیں گے انہوں نے کہا کہ امریکہ پاکستان پر ڈرون حملے کرکے عالمی قوانین کی خلاف کررہا ہے مسلم لیگ ق کے رہنما چودھری ظہیر الدین خان اور ناصر محمود گل نے کہا کہ حکومت بتائے کہ وزیر اعظم کا دورہ امریکہ کا کیا فائدہ ہوا ایک طرف شمالی وزیرستان پر ڈرون حملے جاری ہیں تو دوسر ی طرف طالبان سے مذاکرات کئے جارہے ہیں ان مذاکرات کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا مذاکرات سے قبل حکومت امریکہ سے ڈرون حملے بندکرائے ۔تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے کہا کہ وفاقی حکومت نے امریکہ کو ڈرون حملوں کے زریعے پاکستانیوں کے قتل عام کا لائسنس دے دیا ہے اگر مذاکرات کرنے ہیں تو اچھی بات ہے مگر اس سے قبل ڈرون حملے بند ہونے چاہیے امریکہ پر واضح کردیا جائے کہ مذید قربانیاں نہیں دی جاسکتیں۔جماعت اسلامی کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل فرید پراچہ نے کہا ہے کہ حکومت جرات مندی کا مظاہر ہ کرے امریکہ کے سامنے نہ جھکے اگر امریکہ ڈرون حملے کرنے سے باز نہیں آرہا تو وفاقی حکومت ڈرون گرانے کا حکم دے پوری قوم کو سب سے پہلے پاکستان کی سالمیت عزیز ہے امریکہ ہم پر حملے کرتا ہے اور ہم جھوٹ بول کر اس کے ظلم کو چھپاتے ہیں اور ڈرون حملوں کے نتیجے میں معصوم جانوں کے ضیائع کی تعداد کو قوم سے پوشیدہ رکھتے ہیں اب فریب کی سیاست بند ہونی چاہیے حکومت دوٹو ک الفاظ میں ڈرون روکنے کا حکم دے پاکستان کی سلامتی پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہونا چاہیے۔اور امریکی دباﺅ مستر د کرتے ہوئے طالبان کے ساتھ مذاکرات کئے جائیں ۔

مزید : لاہور /اہم خبریں