لال پیر پاور لمیٹڈ کا ایل آر بی ٹی کے اشتراک سے مظفر گڑھ میں آئی کیمپ کا اہتمام

لال پیر پاور لمیٹڈ کا ایل آر بی ٹی کے اشتراک سے مظفر گڑھ میں آئی کیمپ کا ...

لاہور(پ ر)سب سے نمایاں خودمختار بجلی پیدا کرنے والے لال پیر پاور لمیٹڈ نے لٹن رحمت اللہ بینوولنٹ ٹرسٹ (ایل آر بی ٹی) کے اشتراک سے مظفر گڑھ کے رہائشیوں کے لیے ایک دن کے آئی کیمپ کا اہتمام کیا۔ آئی کیمپ میں 1400 سے زائد مریضوں نے شرکت کی جنہیں کیمپ میں مفت طبی سہولت فراہم کی گئی۔ایک دن کی سرگرمی کے دوران ایل آر بی ٹی سے ماہرین امراض چشم اور معاون سٹاف کی ایک ٹیم نے سی ایس آر کلینک لال پیر میں مریضوں کا معائنہ کیا جہاں انہوں نے مریضوں کو طبی مشورے دیئے،چشمے (عینکیں) تجویز کیں اور جراحی سے متعلقہ مریضوں کا معائنہ بھی کیا۔ مریضوں کی نقل و حمل سے متعلقہ اخراجات، معائنہ فیس، علاج اور عینک کے اخراجات ادارے کی کارپوریٹ سماجی ذمہ داری کے طور پر لال پیر پاور لمیٹڈ نے برداشت کیے۔اقدام کے متعلق بات کرتے ہوئے لال پیر پاور لمیٹڈ کے سی ای او جناب غضنفر سرفراز نے کہا ’’مقامی آبادی کی صحت اور خوشحالی (بہبود) ہمیشہ سے لال پیر پاور لمیٹڈ کے لیے ایک بہت اہم معاملہ رہا ہے۔

کیونکہ ہمارے کام کرنے والوں (یا مزدوروں) کی اکثریت ہمارے پاور پلانٹ کے اردگرد کی مقامی آبادیوں سے آتی ہے۔ ایک دن کے اس آئی کیمپ کا بہت خیرمقدم کیا گیا اور ہم صحت سے متعلقہ مزید اقدامات کرنے کے لیے ایل آر بی ٹی کے ساتھ دوبارہ اشتراک کی امید کرتے ہیں۔‘‘لال پیر پاور لمیٹڈ کے کارپوریٹ سماجی ذمہ داری کے پروگرام مظفر گڑھ اور گردونواح کے علاقے کے رہائشیوں کی صحت، تعلیم، ماحول اور بنیادی ڈھانچے کی بہتری کے لیے مقررہ اقدامات اٹھانے پر مرکوز ہے۔ ماضی میں لال پیر پاور لمیٹڈ نے این جی اوز جیسا کہ کیئر فاؤنڈیشن اور دی سٹیزن فاؤنڈیشن کے ساتھ مفت تعلیم کی فراہمی اور سرکاری سکولوں کو اپنانے کے لیے اشتراک کیا ۔ لال پیر پاور لمیٹڈ نے مقامی آبادی کے لیے سڑکیں اور پُل بنا کر، پینے کے پانی تک رسائی مہیا کرکے اور متاثرینِ سیلاب کے لیے گھر بنا کر دیئے۔لال پیر پاور لمیٹڈ کمپنیزآرڈیننس مجریہ 1984ء کے تحت 8 مئی، 1994 کو پاکستان میں بنایا گیا۔ کمپنی کے اہم4158ال پیر پاور لمیٹڈ کا ایل آر بی ٹی کے اشتراک سے مظفر گڑھ میں آئی کیمپ کا اہتمام

لاہور(پ ر)سب سے نمایاں خودمختار بجلی پیدا کرنے والے لال پیر پاور لمیٹڈ نے لٹن رحمت اللہ بینوولنٹ ٹرسٹ (ایل آر بی ٹی) کے اشتراک سے مظفر گڑھ کے رہائشیوں کے لیے ایک دن کے آئی کیمپ کا اہتمام کیا۔ آئی کیمپ میں 1400 سے زائد مریضوں نے شرکت کی جنہیں کیمپ میں مفت طبی سہولت فراہم کی گئی۔ایک دن کی سرگرمی کے دوران ایل آر بی ٹی سے ماہرین امراض چشم اور معاون سٹاف کی ایک ٹیم نے سی ایس آر کلینک لال پیر میں مریضوں کا معائنہ کیا جہاں انہوں نے مریضوں کو طبی مشورے دیئے،چشمے (عینکیں) تجویز کیں اور جراحی سے متعلقہ مریضوں کا معائنہ بھی کیا۔ مریضوں کی نقل و حمل سے متعلقہ اخراجات، معائنہ فیس، علاج اور عینک کے اخراجات ادارے کی کارپوریٹ سماجی ذمہ داری کے طور پر لال پیر پاور لمیٹڈ نے برداشت کیے۔اقدام کے متعلق بات کرتے ہوئے لال پیر پاور لمیٹڈ کے سی ای او جناب غضنفر سرفراز نے کہا ’’مقامی آبادی کی صحت اور خوشحالی (بہبود) ہمیشہ سے لال پیر پاور لمیٹڈ کے لیے ایک بہت اہم معاملہ رہا ہے۔

کیونکہ ہمارے کام کرنے والوں (یا مزدوروں) کی اکثریت ہمارے پاور پلانٹ کے اردگرد کی مقامی آبادیوں سے آتی ہے۔ ایک دن کے اس آئی کیمپ کا بہت خیرمقدم کیا گیا اور ہم صحت سے متعلقہ مزید اقدامات کرنے کے لیے ایل آر بی ٹی کے ساتھ دوبارہ اشتراک کی امید کرتے ہیں۔‘‘لال پیر پاور لمیٹڈ کے کارپوریٹ سماجی ذمہ داری کے پروگرام مظفر گڑھ اور گردونواح کے علاقے کے رہائشیوں کی صحت، تعلیم، ماحول اور بنیادی ڈھانچے کی بہتری کے لیے مقررہ اقدامات اٹھانے پر مرکوز ہے۔ ماضی میں لال پیر پاور لمیٹڈ نے این جی اوز جیسا کہ کیئر فاؤنڈیشن اور دی سٹیزن فاؤنڈیشن کے ساتھ مفت تعلیم کی فراہمی اور سرکاری سکولوں کو اپنانے کے لیے اشتراک کیا ۔ لال پیر پاور لمیٹڈ نے مقامی آبادی کے لیے سڑکیں اور پُل بنا کر، پینے کے پانی تک رسائی مہیا کرکے اور متاثرینِ سیلاب کے لیے گھر بنا کر دیئے۔لال پیر پاور لمیٹڈ کمپنیزآرڈیننس مجریہ 1984ء کے تحت 8 مئی، 1994 کو پاکستان میں بنایا گیا۔ کمپنی کے اہم کام محمود کوٹ، مظفر گڑھ پنجاب، پاکستان میں تیل سے چلنے والا ذاتی 362 میگا واٹ کے پاور سٹیشن کو چلانا اور دیکھ بھال کرنا ہے۔ ادارہ ہوا، پانی اور زمین پر ماحولیاتی آلودگی کم کرتے ہوئے ملک کی توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کے اپنے وعدے کو نبھائے کی مخلصانہ کوششوں میں مصروفِ عمل ہے۔

کام محمود کوٹ، مظفر گڑھ پنجاب، پاکستان میں تیل سے چلنے والا ذاتی 362 میگا واٹ کے پاور سٹیشن کو چلانا اور دیکھ بھال کرنا ہے۔ ادارہ ہوا، پانی اور زمین پر ماحولیاتی آلودگی کم کرتے ہوئے ملک کی توانائی کی

مزید : علاقائی