مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں کی سروس رائفلوں میں خصوصی کیمپوٹر چپ نصب کرنے کا فیصلہ

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں کی سروس رائفلوں میں خصوصی کیمپوٹر چپ نصب کرنے ...

نئی دہلی ،سری نگر(کے پی آئی) بھارتی وزارت دفاع نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز اہلکاروں سے ہتھیار چھیننے کے واقعات میں اضافے پر تشویش کا اظہار کیا ہے ۔ وزارت دفاع نے سروس رائفلوں میں خصوصی کیمپوٹر چپ نصب کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ چھیننے گئے ہتھیاروں کا وقت پتہ لگایا جاسکے۔ معلوم ہوا ہے کہ اس سلسلے میں ناردرن کمانڈر نے مرکزی وزارت دفاع کو باضابط طورپر آگاہ کیا ہے اور اس ضمن میں ماہرین کی خدمات حاصل کی جار ہی ہیں۔

حزب کمانڈر برہان وانی کی ہلاکت کے بعد وادی میں ہتھیار چھیننے کے واقعات میں اضافہ ہونے کے بعد مرکزی حکومت نے سروس رائفلوں میں خصوصی کیمپوٹر چپ نصب کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ فوری طورپر ہتھیاروں کا پتہ لگایا جاسکے۔ ذرائع کے مطابق اس سلسلے میں فوج نے مرکزی وزارت دفاع کو آگاہ کرتے ہوئے کہاکہ عسکریت پسندوں کی جانب سے ہتھیار چھیننے کے واقعات میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے اوراس کو مد نظر رکھتے ہوئے سروس رائفلوں میں کیموپٹر چپ نصب کرنا ناگزیر بن گیا ہے۔

معلوم ہواہے کہ بھارتی حکومت نے ہتھیار چھیننے کے واقعات کو ناکام بنانے کیلئے ماہرین کی کمیٹی تشکیل دی ہے اور ابتدائی رپورٹ کے مطابق سروس رائفلوں میں کیموپٹر چپ نصب کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور آنے والے دنوں کے دوران اس سلسلے میں باضابط طورپر احکامات صادر کئے جا رہے ہیں۔ دفاعی ذر ئع کے مطابق حزب کمانڈر کی ہلاکت کے بعد اب تک ایک سو ہتھیار پولیس وفورسز اہلکاروں سے چھیننے گئے ہیں جن کا تا حال کوئی سراغ نہیں جاری صفحہ نمبر پر ملا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ جنوبی کشمیر میں ہتھیار لوٹنے کے 14واقعات رونما ہوئے ہیں۔ ناردرن کمانڈر لفٹنٹ جنرل ڈی ایس ہوڈا نے ہتھیار چھیننے کے واقعات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ عسکریت پسندوں کے ارادوں کو ناکام بنانے کیلئے ہنگامی طورپر فیصلے لینے کی ضرورت ہیں ۔

مزید : عالمی منظر