مقبوضہ کشمیر میں سکولوں کی پراسرار آتشزدگی کے واقعات تحریک آزادی کو بدنام کرنے کی سازش ہے ، حریت رہنماء

مقبوضہ کشمیر میں سکولوں کی پراسرار آتشزدگی کے واقعات تحریک آزادی کو بدنام ...

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیں کل جماعتی حریت کانفرنس کے سینئر رہنماء اور انجمن شرعی شیعان کے سربراہ آغا سید حسن الموسوی الصفوی نے وادی کے اطراف و اکناف میں سکولوں کی عمارتوں کو پر اسرار آتشزدگی کے واقعات پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حصول علم اولین اسلامی فریضہ ہے اور تعلیمی اداروں کی ضرورت و اہمیت ایک مسلمہ حقیقت ہے۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق آغا سید حسن نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں تعلیمی اداروں کی آتشزدگی کے واقعات کشمیریوں کی حق پر مبنی جدوجہد آزادی کو بدنام کرنے کی ایک گہری سازش قراردیا۔

انہوں نے کہا کہ حصول علم اولین اسلامی فریضہ ہے اور تعلیمی اداروں کی ضرورت و اہمیت ایک مسلمہ حقیقت ہے۔

انہوں نے کہاکہ سکولوں کی عمارتوں کو جلانے میں جو عناصر ملوث ہیں وہ اس مظلوم قوم کو روشنی سے اندھیروں کی طرف دھکیلنے کی سازش رچا رہے ہیں۔

حریت رہنماء نے کہاکہ کسی بھی قوم کے روشن مستقبل کیلئے ضروری ہے کہ تعلیمی اداروں کو سیاست سے مبرا رکھا جائے لیکن مقبوضہ علاقے میں بھارتی فورسز کے ہاتھوں نہتے شہریوں کے قتل کے خلاف گزشتہ تین ماہ سے زائد عرصے سے جاری ہڑتال اور احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ بند کرانے کیلئے بھارت اور اسکی کٹھ پتلی انتظامیہ نے تعلیم کے شعبے کو ڈھال بنانے کی کوشش کر رہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ اگر واقعی کٹھ پتلی انتظامیہ کو کشمیری طالب علموں کے تعلیمی مستقبل کی فکر ہے تو اسے تمام سرکاری و پرائیویٹ سکولوں کی حفاظت کیلئے موثر پالیسی اختیار کرنی چاہیے۔ آغا سید حسن نے کہا کہ ایسا لگتا ہے انتظامیہ امتحانات سے متعلق طالب علموں کے حق پر مبنی موقف پر انہیں انتقام کانشانہ بنارہی ہے۔ ادھرحریت رہنماؤں شبیر احمد ڈار، محمد اقبال میر ،امتیاز احمدریشی ، غلام نبی واراورانٹرنیشنل فورم فار جسٹس کے چیئرمین محمد احسن اونتو نے ایک مشترکہ بیان میں وادی کشمیرمیں سکولوں کی عمارتوں کو نذر آتش کئے جانے پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ایسے واقعات دانستہ طورپر تحریک آزادی کو بدنام کرنے کیلئے کئے جاتے ہیں ۔

مزید : عالمی منظر