شامی حزب اختلاف کے ارکان کا ملک میں زیر حراست لاکھوں افراد کی رہائی کا مطالبہ

شامی حزب اختلاف کے ارکان کا ملک میں زیر حراست لاکھوں افراد کی رہائی کا مطالبہ

دمشق(اے پی پی) شامی حزب اختلاف کے ارکان نے اقوام متحدہ اور بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ شام میں زیر حراست لاکھوں افراد کی رہائی پر زور دیا جائے تاکہ دم توڑتے ہوئے امن عمل میں جان ڈالنے کی کلیدی کوششوں میں مدد مل سکے۔عرب میڈیا کے مطابق شامی حزب اختلاف کی اعلیٰ مذاکراتی کمیٹی کے نمائندوں کے ایک وفد نے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی برائے شام، سٹافن ڈی مستورا کی ٹیم سے اس معاملے پراصل اور ٹھوس پیش رفت کا مطالبہ کیا ہے۔ شامی انقلاب کے قومی اتحاد اور خالد خوجہ کے اپوزیشن دھڑوں نے کہاہے کہ امن عمل کے لیے ضروری اعتماد سازی کے اقدام کے طور پر شام میں زیرِ حراست افراد کو رہا کیا جائے۔اْنھوں نے کہا ہے کہ اس معاملے کو حل کرنے سے مذاکرات کی میز پر آنے کے لیے ماحول کو سازگار بنایا جا سکتا ہے۔خالد خوجہ نے بتایا کہ حلب، دمشق اور دیگر محصور علاقوں میں امداد کی رسد پہنچانا اور قیدیوں کی رہائی سیاسی عمل کو دوبارہ شروع کرنے اور سیاسی حل کے حوالے سے گفت و شنید کے لیے راہ ہموار کرے گی۔

مزید : عالمی منظر