پانامہ لیکس پر انکوائری کمیشن جسے مجرم ٹھہرائے سپریم کورٹ اس کو سزا دے: سراج الحق

پانامہ لیکس پر انکوائری کمیشن جسے مجرم ٹھہرائے سپریم کورٹ اس کو سزا دے: سراج ...

اسلام آباد(اے این این)امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ کمیشن سے جوبھی مجرم ثابت ہو جائے سپریم کورٹ اس کو سزا دے ،کمیشن کی کارروائی اوپن ہونی چاہیے،حکومت کی ہٹ دھرمی نے پورے ملک کو دلدل میں پھنسا دیا ہے، پوری قوم کی طرف سے سپریم کورٹ میں انصاف اور اپنے پیسوں کے حساب وکتاب کے لیے آئے ہیں،حکومت کی طرف سے عوام کی جیبوں پر سرجیکل سٹرائیک ہمیں منظور نہیں ہے،یہ کسی فرد کا نہیں بلکہ مفاد عامہ کا مسئلہ ہے،محدود وقت میں احتساب ہونا چاہیے اور سب کے احتساب کے لیے جامع نظام تشکیل دینا چاہیے،اپوزیشن حکمرانوں کے لیے آ ئینہ ہوتا ہے ، حکمرانوں نے اپنا چہرہ صاف کرنے کی بجائے آئینہ کو توڑنے کی کوشش کی۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے سپریم کورٹ میں پانامہ لیکس کے حوالے سے دائر درخواستوں کی سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کر تے ہو ئے کیا ۔سراج الحق نے کہا حکومت کی ہٹ دھرمی نے پورے ملک کو دلدل میں پھنسا دیا ہے۔ہم سات ماہ سے مطالبہ کر رہے تھے کہ وزیر اعظم اپنے اعلان کے مطابق اپنے آپ کو احتساب کے لیے پیش کریں لیکن وزیراعظم 1947ء سے احتساب کی بات کرتے تھے مطلب یہ کہ وہ قائد اعظم کا بھی احتساب کرناچاہتے ہیں۔ہمارا پہلے دل سے یہی مطالبہ تھا کہ احتساب حکمرانوں اور ان کے خاندانوں سے شروع ہو اور پیچھے تک جائے۔

سراج الحق

مزید : صفحہ آخر