پیپلز پارٹی میں کوئی گروپ بندی یا اختلاف نہیں ،عبدالاکبر خان

پیپلز پارٹی میں کوئی گروپ بندی یا اختلاف نہیں ،عبدالاکبر خان

رستم(نامہ نگار )سابقہ سپیکر خیبر پختونخوا اسمبلی عبد الاکبر خان اور ضلعی نائب ناظم اسد علی کشمیری نے اے این پی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اپنے جلسوں کو کامیاب بنانے کیلئے ضلع بھر اور دیگر اضلاع سے عوام کو اکٹھا کرنا اور ان کو کرایہ دینا کیسی سیاست ہے ووٹ مقامی عوام دینگے جلسوں میں زیادہ سے زیادہ عوامی شرکت سے اے این پی کیا تاثر دینا چاہتی ہے، اے این پی کا حلقہ پی کے 29میں صرف پانچ ہزار ووٹ ہے جو گزشتہ کئی انتخابات کے نتائج سے واضح ہوچکاہے،اے این پی اور تحریک انصاف کی عوام دشمنی اور ناقص کارکردگی کے باعث پیپلزپارٹی کی عوامی مقبولیت میں اضافہ ہورہاہے اور آئندہ عام انتخابات کے دوران پی کے29 اور این اے 11میں کلین سویپ کریگی اورسدھوم ایک بار پھر منی لاڑکانہ ثابت ہوگا، ان خیالات کا اظہار انہوں نے یہاں ایک جلسہ عام سے خطاب کے دوران کیا جس کی صدارت چیئر مین اورنگ شیر نے کی جلسہ سے حاجی فیاض علی اعوان، ضیاء الدین اور جنرل کونسلر اعجاز خان نے بھی خطاب کیا انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعلیٰ نے پی کے 29کے درجنوں پارٹی اراکین سے عام انتخابات میں پارٹی ٹکٹ دینے کا وعدہ کیا ہے لیکن ٹکٹ تو صرف ایک کو ملے گا باقی پارٹی سے بغاوت کریں گے، جو ہمارے پلس پوائنٹ ہے، انہوں نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی میں کوئی گروپ بندی یا اختلافات نہیں کارکن اور قائدین متحد و منظم ہیں۔عوام کی نظریں اب پی پی پی پر لگی ہوئی ہیں اور جوق درجوق دوسرے پارٹیوں سے مستعفی ہوکر پی پی پی میں باقاعدہ شمولیت اختیار کررہے ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر