شربت گلہ کیس ،رہائی کی درخواست پر دلائل مکمل فیصلہ آج ہوگا

شربت گلہ کیس ،رہائی کی درخواست پر دلائل مکمل فیصلہ آج ہوگا

پشاور(نیوزرپورٹر)سپیشل جج ایمیگریشن فرح جمشید نے نیشنل جیوگرافک سے شہرت پانے والی افغان خاتون شربت گلہ کی ضمانت پررہائی کی درخواست پردلائل مکمل ہونے پرفیصلہ آج بدھ کے روز تک محفوظ کرلیاہے پیرکے روز فاضل عدالت نے جعلی پاکستانی شناختی کارڈ رکھنے کے الزام میں گرفتار افغان خاتون شربت گلہ کی جانب سے دائردرخواست ضمانت کی سماعت شروع کی تو اس موقع پران کے وکلاء مبشرنذراورعبداللطیف آفریدی نے عدالت کوبتایا کہ درخواست گذارہ افغان شہری ہے جو افغاان جنگ کے دوران والدین کے ہمراہ پشاورمنتقل ہوئی اورافغان مہاجرکیمپ ناصرباغ میں قیام پذیرہوئی اورایک بین الاقوامی فوٹوگرافر نے اس کی بچپن میں تصاویربنانے کے بعد 20سال بعد دوبارہ پاکستان آکراس کی تلاش کی اورملنے پراس کی دوبارہ تصاویربنائیں جو نیوزویک کے سرورق پرشائع ہوئیں اوراس طرح گرفتارہونے والی خاتون نے بین الاقوامی شہرت پائی جبکہ اس دوران اس کی شادی بھی ہوئی اوراس کے دوبچے ہیں تاہم ایف آئی اے حکام نے شربت گلہ کو 26اکتوبر2016ء کو پاکستانی شناختی کارڈ بنانے کے الزام میں گرفتار کیاہے جبکہ حکومت پاکستان کی جانب سے ایسے تمام افغانیوں کو 31اکتوبرتک کی مہلت دی تھی کہ وہ اپنے پاکستانی شناختی کارڈ رضاکارانہ طورپر واپس کریں اوردرخواست گذارہ نے نہ صرف شناختی کارڈ واپس کرناتھابلکہ اس نے تمام پیکنگ کررکھی تھی اورعنقریب اس نے افغانستان واپس جاناتھا کیونکہ وہ ا س وقت بیوہ ہے اور تمام خاندان کی کفالت بھی اس کے ذمہ ہے لہذا درخواست گذارہ کوضمانت پررہاکیاجائے اس موقع پر ایف آئی اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹرلیگل جاوید علی مہمند نے درخواست کی مخالفت کی اوربتایاکہ درخواست گذارہ نے ایک جانب مہاجرکارڈ بنارکھاہے جبکہ دوسری جانب اس نے جعلی پاکستانی شناختی کارڈ بنارکھاہے اور درخواست گذارہ کو جعلی شناختی کارڈ جاری کرنے پر نادرا کے بعض افسروں کے خلاف مقدمہ بھی درج کیاگیاہے اوران میں سے بعض افسرملازمت سے بھی معطل ہیں لہذادرخواست گذارہ کسی رعایت کی مستحق نہیں ہے لہذااس کی درخواست ضمانت خارج کی جائے عدالت نے دو طرفہ دلائل مکمل ہونے پردرخواست ضمانت پرفیصلہ محفوظ کرلیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر