موٹروے سے بنی گالہ پہنچنے کا پلان غلط تھا،جی ٹی روڈ سے پہنچ سکتے تھے،مشتاق غنی کا اعتراف

موٹروے سے بنی گالہ پہنچنے کا پلان غلط تھا،جی ٹی روڈ سے پہنچ سکتے تھے،مشتاق ...

صوابی(اے این این) خیبر پختون خوا کے وزیر اطلاعات مشتاق غنی نے اعتراف کیا ہے موٹروے کے ذریعے بنی گالہ جانے کا پلان غلط تھا،ہم شروع میں ہی جی ٹی روڈ ی کا انتخاب کرتے تو آسانی سے منزل تک پہنچ جاتے۔برطانوی نشریاتی ادارے سے گفتگو میں انھوں نے تصدیق کی کہ برہان انٹرچینج سے آگے بڑھنا مشکل تھا اس لیے پیچھے ہٹ گئے ہیں ۔انھوں نے کہا کہ پولیس نے ساری رات شیلنگ کی ہے اور اسی لیے وزیر اعلی پرویز خٹک نے کارکنان سے برہان انٹرچینج سے پیچھے ہٹنے کا کہا ہے۔ امکان ہے کہ ہم برہان سے پیچھے ہٹ کر جی ٹی روڈ سے اسلام آباد پہنچیں گے۔انھوں نے اعتراف کیا کہ موٹر وے سے اسلام آباد جانے کا پلان غلط تھا۔ اگر ہم شروع ہی سے جی ٹی روڈ کے ذریعے اسلام آباد پہنچنے کی کوشش کرتے تو ہم اسلام آباد پہنچ چکے ہوتے۔انھوں نے مزید بتایا کہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ کارکنان زیادہ قیمتی ہیں اس لیے پیچھے ہٹ جاؤ اور میرے حکم کا انتظار کریں۔انھوں نے کہا کہ ہماراقافلہ پرامن تھا اور جیسے ہی موٹروے پر چھچھ انٹرچینج پر پہنچے تو پولیس نے آنسو گیس کی شیلنگ شروع کر دی۔انھوں نے بتایا کہ تصادم کے بعد پولیس پیچھے ہٹ گئی ہے اور ان کے کارکن کنٹینر ہٹا کر آگے بڑھنے لگے۔مشتاق غنی نے دعوی کیا کہ پولیس نے ان کے کارکنوں پر ربڑ کی گولیاں بھی چلائیں جن سے 15 کے قریب کارکن زخمی ہوئے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ تحریکِ انصاف کی قیادت اور کارکن دونوں پیچھے نہیں ہٹیں گے اور اسلام آباد پہنچ کر ہی دم لیں گے۔

مزید : پشاورصفحہ اول