سیکیورٹی اداروں کی کلبھوشن یادیو کے بعدایک بڑی کامیابی ، پاکستان میں تعینات بھارت کے دو سفارتی اہلکاروں کی طرف سے تخریب کاری کا نیٹ ورک چلائے جانے کا انکشاف

سیکیورٹی اداروں کی کلبھوشن یادیو کے بعدایک بڑی کامیابی ، پاکستان میں تعینات ...
سیکیورٹی اداروں کی کلبھوشن یادیو کے بعدایک بڑی کامیابی ، پاکستان میں تعینات بھارت کے دو سفارتی اہلکاروں کی طرف سے تخریب کاری کا نیٹ ورک چلائے جانے کا انکشاف

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان میں بھارت کا بڑا جاسوسی نیٹ ورک پکڑا گیا ہے اور انکشاف ہوا ہے کہ بھارتی سفارتخانے کے دو اہلکار تخریب کاری کا نیٹ ورک چلا رہے ہیں۔ ان اہلکاروں میں راجیش کار اگنی ہوتری کمرشل قونصلر کے لبادے میں تعینات ہے جبکہ بھارتی خفیہ ایجنسی آئی بی کا افسر بلبیر سنگھ بھی فرسٹ سیکرٹری پریس انفارمیشن کے لبادے میں تعینات ہے۔

ٹیلی نار اور بیکن ہاﺅس نے مل کر گینز ورلڈ ریکارڈ بنا ڈالا

میڈیا رپورٹس کے مطابق راجیش کمار ا اگنی ہوتری تخریبی کاررائیوں میں ملوث ہے اور بلبیر سنگھ بھی آئی بی کے کارندوں کے ذریعے پاکستان میں تخریبی کارروائیاں کرانے میں سرگرم عمل ہے ۔پاکستان سے ناپسندیدہ شخصیت قرار دے کر نکالا جانے والا سرجیت سنگھ بھی بلبیر سنگھ کے نیٹ ورک کا حصہ تھا جس نے عبداحفیظ کے نام سے موبائل فون کمپنی کا جعلی کارڈ بھی بنوایا ہا تھا۔ذرائع کے مطابق یہ نیٹ ورک بلوچستان میں ترجیحی بنیادوں پر کارروائیاں کرتا تھا جبکہ کراچی، فاٹا اورپشاور بھی اس کے نشانوں پر ہے اور سرحد پار بھی ان کے رابطے ہیں۔

گوادر،ایف سی اور حساس اداروں کی کارروائی ،4 دہشت گرد ہلاک

ذرائع کا کہنا ہے کہ کئی عرصے سے ان دونوں اہلکاروں کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کے بعد یہ معاملات سامنے آئے ہیں اور اب سرجیت سنگھ کی طرح انہیں بھی ناپسندیدہ شخصیات قرار دے کر پاکستان چھوڑنے کا حکم دیدیا جائے گا۔

مزید : قومی /اہم خبریں