لاہور اور گردونواح سمیت وسطی پنجاب میں گزشتہ شام سے چھانے والی دھند اگلے دو ماہ تک رہے گی:ڈی جی میٹ

لاہور اور گردونواح سمیت وسطی پنجاب میں گزشتہ شام سے چھانے والی دھند اگلے دو ...
لاہور اور گردونواح سمیت وسطی پنجاب میں گزشتہ شام سے چھانے والی دھند اگلے دو ماہ تک رہے گی:ڈی جی میٹ

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)ڈی جی میٹ نے کہاہے کہ لاہور اور گردونواح سمیت وسطی پنجاب میں گزشتہ شام سے چھانے والی دھند اگلے دو ماہ تک رہے گی اور بارش ہونے کے بعد ہی یہ ختم ہو گی۔اس کی وجہ سے سے شہریوں کوآنکھوں میں شدید چبھن ہے اور موٹرسائیکل سواروں کیلئے چلنا مشکل ہوگیا لیکن یہ دراصل دھند نہیں بلکہ آلودگی ہے جس کی وجہ سے حد نگاہ میں بھی کمی ہوئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ڈی جی میٹ ڈاکٹر غلام رسول کا کہناتھا کہ یہ دھند دسمبر تک جاری رہنے کا امکان ہے کیونکہ اکتوبر سے قبل وسطی پنجاب میں بارشیں ہونے کے امکانات نہیں ہیں اور یہ آلودگی بھی بارش کے باعث ہی ختم ہوگی ۔انہوں نے کہا کہ فضائی آلودگی میں اضافہ شہر میں گاڑیوں کی آلودگی ،زیر تعمیر منصوبوں اور موسم میں تبدیلی کی وجہ اضافہ ہواہے ۔اصل میں سب سے زیادہ کردار آلودگی کو بڑھانے میں گرم موسم نے ادا کیاہے ۔

لاہور سمیت مختلف علاقوں میں محسوس کی جانیوالی دراصل دھند (Fog) نہیں بلکہ آلودگی کی ایک قسم آلودگی(Smog) ہے جو دھویں اور دھند کا مرکب ہے۔ جب ہوانہیں چلتی اور درجہ حرارت میں کمی یا دیگر موسمی تبدیلی ہوتی ہے توآلودگی فضاءمیں اوپرنہیں جاتی بلکہ زمین کے قریب ہی ایک تہہ بن جاتی ہے جس کی وجہ سے آلودگی کئی کئی دن تک شہرمیں رہ سکتی ہے ، مزید یہ کہ ٹریفک اور دیگر ذرائع سے پیدا ہونیوالی آلودگی اس میں مزید اضافہ کردیتی ہے۔اس سموگ میں نائیٹروجن آکسائیڈہوتے ہیں۔

انسانوں اور کرہ ارض کو خطرناک شعاعوں سے بچانیوالی اوزن لیئر کی طرح کی زمین کے قریب بننے والی اس تہہ کی وجہ سے آلودگی بڑھ جاتی ہے اور سانس کی تکالیف اور آنکھوں میں چبھن ہوتی ہے۔اس صورتحال میں سب سے زیادہ چھوٹے بچے ، کھلے مقامات پر کام کرنیوالے لوگ، حاملہ خواتین اور سانس کی بیماری میں مبتلاءمریض متاثر ہوتے ہیں۔

مزید : ماحولیات