’عمران خان نے استعفیٰ دیا تو میں سیاست چھوڑ دوں گا‘ علامہ طاہر اشرفی مولانا فضل الرحمان کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر کھڑے ہوگئے

’عمران خان نے استعفیٰ دیا تو میں سیاست چھوڑ دوں گا‘ علامہ طاہر اشرفی مولانا ...
’عمران خان نے استعفیٰ دیا تو میں سیاست چھوڑ دوں گا‘ علامہ طاہر اشرفی مولانا فضل الرحمان کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر کھڑے ہوگئے

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد میں مولانا فضل الرحمان کی زیر قیادت اپوزیشن جماعتوں کا احتجاج اور دھرنا جاری ہے جبکہمولانا فضل الرحمان نےجلسے سےخطاب میں وزیراعظم عمران خان کو مستعفی ہونے کیلئے 48 گھنٹوں کی مہلت دے دی ہے،ایسے میں ملک کے معروف مذہبی رہنما اور پاکستان علماء کونسل کے سربراہ علامہ حافظ  طاہر محمود اشرفی نے مولانا فضل الرحمان سمیت اپوزیشن جماعتوں کو بڑا چیلنج دے دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں ہونے والے’ آزادی مارچ‘ جلسے میں بلاول  بھٹو ،شہباز شریف ،مولانا فضل الرحمان سمیت دیگر رہنماؤں کی گرما گرم تقاریر نے سیاسی ماحول کو خوب گرما دیا ہے۔مولانا فضل الرحمان نےجلسے سےخطاب میں وزیراعظم عمران خان کو مستعفی ہونے کیلئے 48 گھنٹوں کی مہلت دیتے ہوئےکہا کہ ایک دن آج کا اور اگلے دو دن، اس دوران وزیراعظم استعفیٰ دے دیں ، مولانا فضل الرحمان نے جلسے کے شرکاء سے پوچھا کہ کیا آپ لوگ استعفے سے کم پر مانو گے؟ جس پر شرکاء نے یک زبان ہوکر ’نہیں‘ کے نعرے لگائے۔اپوزیشن جماعتوں کے آزادی مارچ کے ہونے والے جلسے کےبعد حکومتی و اتحادی جماعتوں نے اپوزیشن رہنماؤں کو اپنی تنقید کا نشانہ بنانا شروع کر دیا ہے۔وزیر دفاع اور حکومتی کمیٹی کے سربراہ پرویز خان خٹک نے کہا ہے کہ  وزیراعظم عمران خان کی گرفتاری کی بات کرنا بلی کو خواب میں چھیچھڑے نظر آنے کے مترادف ہے، اگر کسی نے قانون کی خلاف ورزی کی یا معاہدہ توڑا تو یہ حکومت ہے کوئی مذاق نہیں ہے بھرپور قانونی کارروائی ہوگی، ان حالات میں اپوزیشن سے مذاکرات مشکل ہیں، اگر ضرورت محسوس ہوگی تو مذاکرات کریں گے۔

دوسری طرف پاکستان علماء کونسل کے سربراہ علامہ حافظ طاہر محمود اشرفی نے بھی  سوشل میڈیا پر کی جانے والی پوسٹ میں کسی کو مخاطب کئے بغیر چیلنج کیا ہے کہ اگر دو دن میں وزیر اعظم عمران خان نے استعفیٰ دیا تو سیاست ترک کردوں گا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کو لبیا اور شام  بنانے کی سازش ناکام ہو گی ،پوری قوم چند شرپسندوں کے علاوہ افواج پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑی ہے۔

 

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...