خاصہ دار فورس کو رینک ٹو رینک ترقی دی جائیگی،ذرائع

  خاصہ دار فورس کو رینک ٹو رینک ترقی دی جائیگی،ذرائع

  



خیبر (بیورورپورٹ)لنڈیکوتل اور جمرود میں اہم پوسٹوں پر خا صہ دار فورس سے ریٹائرڈ اہلکاروں کی تعیناتی سے سیناڑٹی اورسسٹم بھی متاثر ہو گئی ہیں اہم کیسز نمٹانے میں شدید مشکلات درپیش ہیں،ریگولرصوبیدار روں نے یٹائر ڈ صوبیدار کی آڈرماننے سے انکار کرکے پوسٹیں چھوڑنے سے بھی انکاری ہو گئے،خاصہ دار فورس ذرائع خاصہ دار فورس ذرائع کے مطابق کہ تقریبا دو ہفتے پہلے لنڈیکوتل میں اہم پوسٹ پر تعینات خاصہ دار فورس سے ایک بار ریٹائر ڈ اہلکار نے تقریبا گیارہ صوبیدار اور نائب صوبیدار وں کے تبا دلے کئے جس پر چھ ریگولر صوبیداروں نے آڈر ماننے سے انکار کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ انضمام کے خاصہ دار رفورس کو پولیس میں ضم کیا گیا اور انکے ساتھ وعدہ کیا گیاتھا کہ خاصہ دار فورس کو رینک ٹورینک پولیس میں تر قی دی جائیگی لیکن تاحال اس پر عمل درامد نہیں کیا گیا بلکہ ریٹائر ڈ اہلکاروں کو ان پر مسلط کی گئی اور انکو اہم پوسٹیں دی گئی انہوں نے بتا یا کہ ریٹائرڈ اہلکار نے ظلم کی انتہا کر دی انہوں نے لنڈی کوتل اور طورخم میں صوبیداروں پر نائب صوبیدار اور سپاہی مسلط کرکے انہیں اختیارات دی گئی اس لئے ریگولر صوبیداروں نے انکے آرڈرماننے سے انکار کیا خاصہ دار فورس ذرائع کے مطابق کہ لنڈیکوتل میں تین قومیں آباد ہیں اور تینوں قوموں کے صوبیداروں کوایک، ایک اہم پوسٹییں دی جا تی ہیں لیکن ریٹائرڈ صوبیدار نے دو عہدے اپنے ساتھ رکھ شینواری قوم کو کوئی اہم عہدہ نہیں دیا گیا ہیں خاصہ دارفورس ذرائع نے بتایا کہ ریگو صوبیداروں نے ان تمام صورتحال سے ڈی پی او کو آگاہ کیا لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی بلکہ اس سلسلے میں جر گے کرکے ریگو لر صوبیداروں کو آرڈر ماننے پر راضی کرنے کی کوشش کر تے ہیں لیکن تا حل جر گہ اس سلسلے میں جرگہ ممبران کامیاب نہیں ہوسکے

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...