ڈرائی پورٹ چارجز میں کمی کیلئے اقدامات کررہے ہیں‘ جلال الدین رومی

ڈرائی پورٹ چارجز میں کمی کیلئے اقدامات کررہے ہیں‘ جلال الدین رومی

  



ملتان(نیوز رپورٹر) چیئرمین ملتان ڈرائی پورٹ ٹرسٹ خواجہ جلال الدین رومی نے کہا ہے کہ ملتان ڈرائی پورٹ سے کنٹینرز کی تعداد 200 سے بڑھا کر 500 تک لے جائیں گے۔ ڈبل سیس کی وجہ سے کاروباری افراد کے تحفظات ہیں اور ان کو اس ٹیکس کی وجہ سے شدید پریشانی کا سامنا ہے۔جنوبی پنجاب سے درآمدات وبرآمدات کو بڑھانے کے لئے صادق آباد ایکسپورٹ ٹرمینل اور مظفرگڑھ ایکسپورٹ ٹرمینل کے ساتھ ساتھ ڈرائی پورٹ کو بھی مزید فعال کیا جارہا ہے اور موجودہ حکومت بھی جنوبی پنجاب (بقیہ نمبر49صفحہ12پر)

کے ایکسپورٹرز اور امپورٹرز کو مزید مراعات اور ترغیبات دینے کی خواہاں ہے۔ وہ گزشتہ روز ملتان ڈرائی پورٹ ٹرسٹ کے ٹرسٹیز کی میٹنگ کی صدارت کررہے تھے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت ملتان ڈرائی پورٹ سے 200 کنٹینرز جارہے ہیں ہم ان کی تعداد 500 تک لے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ڈبل سیس کی وجہ سے کاروباری افراد کے تحفظات ہیں۔ اگر حکومت پنجاب ڈرائی پورٹس سے ایک فیصد سیس (Cess) ختم کردے تو ان کا بزنس کئی گنا بڑھ جائے گا۔ خواجہ جلال الدین رومی نے کہا کہ زیادہ تعداد میں ایکسپورٹس اور امپورٹس کرنے والوں کو خصوصی رعایت دی جائے گی۔ ڈرائی پورٹ کے چارجز میں کمی کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مظفرگڑھ ایکسپورٹ ٹرمینل کے فعال ہونے سے ڈیرہ غازیخان ڈویژن کے تما کاروباری افراد کو فائدہ پہنچے گا۔ اسی طرح صادق آباد ایکسپورٹ ٹرمینل سے رحیم یار خان سے فاطمہ گروپ، اینگرو، یونی لیور ودیگر بڑے صنعتی ادارے فائدہ اُٹھا سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کسٹمز کلکٹریٹ کے حکام نے جنوبی پنجاب کے ایکسپورٹرز اور امپورٹرز کو زیادہ سے زیادہ سہولیات اور ترغیبات دینے اور انہیں کراچی کے مساوی رعایت دینے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ اجلاس میں وائس چیئرمین اسرار احمد اعوان، سید محمد عاصم شاہ، خواجہ محمد یونس، میاں تنویر اے شیخ، سید محمد احسن شاہ، محمد احمد چغتائی، شیخ تنویر احمد، خواجہ محمد منصور، خواجہ محمد یوسف، خواجہ محمد فاضل، خواجہ محمد حسین، میاں منصور رشید،، کرنل (ر) اویس بٹ اور محمد صابر نے شرکت کی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...