مولانا اس وقت سے ڈرین جب عمران خان اپنے جوانوں کو کال دینگے: شوکت یوسفزئی

مولانا اس وقت سے ڈرین جب عمران خان اپنے جوانوں کو کال دینگے: شوکت یوسفزئی

  



پشاور(سٹاف رپورٹر) وزیراطلاعات خیبرپختونخوا شوکت یوسفزئی نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمان اس وقت سے ڈرے جب عمران خان اپنے نوجوانوں کو نکلنے کی کال دیں گے،پندرہ لاکھ لوگ لانے کا دعویٰ کرنے والے 90 ہزار سے زیادہ لوگ نہ لا سکے، مودی کوخوش کرنا اورہندوستان کا مقصد پورا کرنا مولانا کامشن ہے۔ہم جب دھرنہ دینے اسلام آبادجارہے تھے تو تاریخی شیلنگ کی گئی، قومی اسمبلی میں ایک سیٹ 12 ووٹوں سے جیتنے والا اسفندیار ولی بھی وزیر اعظم کا استعفیٰ مانگ رہے ہیں۔پشاورمیں خیبرپختونخواحکومت کے ترجمان اجمل وزیراور مشیر فضل حکیم کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے شوکت یوسفزئی کاکہنا تھا کہ آزادی مارچ کے حوالے سے کل کسی کو پتہ نہیں چلا کہ اپوزیشن جماعتیں اسلام آباد گئے ہیں یا نہیں،ہم جب دھرنہ دینے اسلام آبادجارہے تھے توریلی پر تاریخی شیلنگ کی گئی،خواتین کی سیاست کی بات کرنے والے خواتین پر پابندی لگارہے ہیں ان کا رویہ غیر ذمہ دارانہ ہے، خواتین اسمبلیوں میں بیٹھ سکتی ہیں تو جلسے میں کیوں نہیں، شوکت یوسفزئی کا کہنا تھا کہ قومی اسمبلی میں ایک سیٹ 12 ووٹوں سے جیتنے والا اسفندیار ولی بھی وزیر اعظم کا استعفیٰ مانگ رہے ہیں،اپوزیشن کو مینڈیٹ ملا ہی نہیں مولانا کو پارلیمنٹ سے باہر ہونے کا دکھ ہے، شوکت یوسفزئی کا کہنا تھاکہ جمہوریت نہیں مانتے تو منافقت کیوں کررہے ہیں، مودی کو خوش کرنا اور ہندوستان کا مقصد پورا کرنا مولانا کا مشن ہے۔ وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ اگرقانون کو ہاتھ میں لیا گیا، معاہدہ توڑا گیا تو سخت ایکشن لیا جائے گاپندرہ لاکھ لوگ لانے کا دعویٰ کرنے والے 90 ہزار سے زیادہ لوگ لا نہ سکے، کراچی سے مفت ٹرانسپورٹ انجوائے کرنے والے لاہور تک ساتھ آکر واپس چلے گئے، ایک لاکھ افراد لاکر کوئی سسٹم جام نہیں کرسکتا،صوبائی وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی کا کہنا تھا کہ مولانا کی دھمکیوں کی مذمت کرتا ہوں مولانا ڈریں اس وقت سے جب عمران خان اپنے نوجوانوں کو نکلنے کی کال دیں گے، قوم نے مولانا کا ایجنڈا مسترد کردیا ہے، شوکت یوسفزئی کا کہناتھا کہ وزیر اعظم کے استعفے کا سوال پیدا نہیں ہوتا حکومت چلتی رہے گی مولانا فضل الرحمن کومزید چار سال انتظار کریں کرنی ہوگی۔وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ عمران خان نے پہلے ہی کہا تھا کہ اپوزیشن میرے خلاف اکھٹی ہوگی ہم نے دھرنا دینے سے قبل الیکشن ٹریبونل اور سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھااسفندیار ولی، آفتاب شیرپاؤ اور مولانا کو ان کے حلقوں کے عوام نے مسترد کیا، ایک سوال کے جواب میں شوکت یوسفزئی کاکہنا تھا کہ کیا مہنگائی عمران خان لیکر آئے؟کیاوزیر اعظم کے استعفے سے مہنگائی کم ہو جائے گی؟ اخر میں شوکت یوسفزئی کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان منافق نہیں ہے، ان کے لوگوں کے بارے میں الفاظ نہیں بدلیں گے مولانا نے کشمیر اور تبلیغی اجتماع سے بھی عوام کی توجہ ہٹادی۔

شوکت یوسفزئی

مزید : صفحہ اول


loading...