اسلام آباد میں بارش، خنکی بڑھ گئی،مارچ کے شرکاء محظوظ ہوتے رہے

اسلام آباد میں بارش، خنکی بڑھ گئی،مارچ کے شرکاء محظوظ ہوتے رہے

  



اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وفاقی دارالحکومت میں خدا تعالی بھی آزادی مارچ کے شرکاء پر مہربان ہوگیا اور وقفے وقفے سے ہونے والی ہلکی بوندا باندی رات 9بجے کے بعد تیز بارش میں تبدیل ہوگئی اور خنکی کے ساتھ ساتھ سردی میں بھی اضافہ ہوگیا۔ تاہم جی 9 پشاور موڑ کے نزدیک سجائے گئے پنڈال میں موجود شرکاء کی بڑی تعداد بارش سے پریشان ہونے کی بجائے محظوظ ہوتی رہی۔ جلسے کے اختتام پر جڑواں شہر راولپنڈی، اسلام آباد، روات گجر خان، حسن ابدال، برہان اور قرب و جوار سے آئے ہوئے شرکاء تو واپس چلے تاہم خیبرپختونخوا، بلوچستان، سندھ اور پنجاب سے قافلوں کی شکل میں آئے ہزاروں میں تعداد شرکاء نے رات گئے تک پنڈال کو سجائے رکھا۔ کچھ قافلے اپنے ساتھ بستر کمبل اور شامیانے بھی لائے تھے جنہوں نے بارش تیز ہوتے ہی وہ شامیانے بھی تان لئے جبکہ سینکڑوں مقامات پر گیس کے چولہے اور لکڑی سے آگ جلا کر شرکاء کی بڑی تعداد نے خوب رتجگے کئے اس پنڈال کے قرب و جوار میں جہاں معمول کے دنوں میں ماڈل اتوار بازار لگا کرتا تھا وہاں سینکڑوں کی تعداد میں عارضی دکانیں اور ٹھیکے سج گئے۔ جہاں مارچ میں شریک ہزاروں افراد رات گئے تک اشیاء خوردونوش کے ساتھ دیگر چیزوں کی شاپنگ بھی کرتے رہے۔ بڑی تعداد میں لوگ جڑواں شہر کے مختلف ہوٹلوں میں بھی قیام پذیر ہوگئے دونوں شہروں کے ہوٹل بدھ کی شام سے ہی جام پیک ہیں اور کسی چھوٹے کمرے ہوٹل میں بھی کمرہ خالی نہیں۔ جمعہ کی رات گئے مختلف سڑکوں پر کھڑی کی گئی رکاوٹیں اور عارضی ناکے بھی نرم پڑ گئے تاہم فیض آباد، کشمیر ہائی وے، اور راولپنڈی اسلام آباد میں آنے جانے والے داخلی خارجی راستوں پر کنٹینر موجود ہیں پنجاب پولیس کے دستے بھی بڑی تعداد میں راولپنڈی اسلام آباد میں فرائض سنبھالے ہوئے ہیں جبکہ قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کے افسر اور جوان بھی ہزاروں کی تعداد میں مختلف مقامات پر موجود ہیں۔ رات گئے جے یو آئی، مسلم لیگ ن، پیپلز پارٹی اور اے این پی سمیت اپوزیشن جماعتوں کے مرکزی و مقامی رہنما بھی جلسہ گاہ میں آکر اپنے کارکنوں کے ساتھ گپ چھپ کرتے رہے اس موقع پر ایک بڑے رہنما کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہمارایہ احتجاج 12ربیع الاول تک چل سکتا ہے۔

بارش

مزید : صفحہ اول


loading...