وزیراعظم کی سربراہی میں اجلاس،پی ٹی آئی کور کمیٹی نے وزیراعظم کے استعفے اورنئے انتخابات کا مطالبہ مسترد کردیا

وزیراعظم کی سربراہی میں اجلاس،پی ٹی آئی کور کمیٹی نے وزیراعظم کے استعفے ...
وزیراعظم کی سربراہی میں اجلاس،پی ٹی آئی کور کمیٹی نے وزیراعظم کے استعفے اورنئے انتخابات کا مطالبہ مسترد کردیا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم کی زیرصدارت اجلاس میں پی ٹی آئی کور کمیٹی نے وزیراعظم کے استعفے اور نئے انتخابات کا مطالبہ مسترد کردیا، وزیراعظم نے وزارت داخلہ کو تیاری مکمل رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی ناخوشگوار واقعہ پیش آنے پرفوری کارروائی کی جائے اور رہبر کمیٹی کو بات چیت جاری رکھنے کی ہدایت کردی۔

کور کمیٹی کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کاکوئی بھی غیر آئینی مطالبہ قبول نہیں کیا جائے گا۔کور کمیٹی نے کہا کہ مارچ کے شرکادھرنے میں جتنی دیر بیٹھنا چاہیں بیٹھنے دیں،معاہدے کیخلاف ورزی کی گئی تو ریاست اپنی عمل داری دکھائی گی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کی زیرصدارت پی ٹی آئی کور کمیٹی کااجلاس ہوا،پرویزخٹک نے کور کمیٹی کو اپوزیشن سے رابطوں کے متعلق آگاہ کیا،پی ٹی آئی کور کمیٹی نے وزیراعظم کے استعفے کا مطالبہ مسترد کردیا،ذرائع کا کہنا ہے کہ نئے انتخابات کا مطالبہ بھی کور کمیٹی نے مسترد کردیا،کور کمیٹی کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کاکوئی بھی غیرآئینی مطالبہ قبول نہیں کیا جائے گا۔کور کمیٹی نے کہا کہ اپوزیشن کے آئینی حق کی وجہ سے اسلام آبادمیں احتجاج کی اجازت دی ۔

کور کمیٹی نے کہا کہ مارچ کے شرکادھرنے میں جتنی دیر بیٹھنا چاہیں بیٹھنے دیں،معاہدے کیخلاف ورزی کی گئی تو ریاست اپنی عمل داری دکھائی گئی اورمذکرات کا سلسلہ جاری رہے گا۔کور کمیٹی اجلاس میں رہبر کمیٹی کے علاوہ جماعتوں سے علیحدہ علیحدہ رابطوں کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے،کمیٹی ارکان کا کہناتھا کہ اگر کوئی مسئلہ ہے تو اس کو عدالتی فورم پر بھی لیا جا سکتا ہے اور مسئلے کا حل نکالا جاسکتا ہے۔

وزیراعظم کا خطاب کرتے ہوئے کہناتھا کہ اسلام آبادکے شہریوں کے حقوق متاثر نہیں ہونے چاہئے ،پی ٹی آئی کے کور کمیٹی اجلاس میں وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کی بلیک میلنگ میں نہیں آئیں گے، غیر جمہوری اور غیر آئینی مطالبات تسلیم نہیں کر سکتے۔

 ادھر عمران خان کےساتھ آج حکومتی کمیٹی نے ملاقات کی جس میں وزیر اعظم نے حکومتی کمیٹی کو رہبرکمیٹی سے بات چیت جاری رکھنے کی ہدایت کی ہے۔

ذرائع کے مطابق وزیر اعظم کا حکومتی کمیٹی کو کہنا ہے کہ اپوزیشن نے بلیک میل کرنے کی کوشش کی تو مذاکرات نہیں ہونے چاہئیں، انہوں نے کہا کہ رہبر کمیٹی سے ملاقات کے بعد آگاہ کیا جائے کہ وہ کون سا جمہوری حق مانگ رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کی طرف سے استعفے کا مطالبہ بھی حماقت ہے، حکومت نے اپوزیشن کے ساتھ معاہدہ کرکے انہیں جمہوری حق دیا ہے، پھر بھی اگر معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی تو قانون اپنا راستہ خود بنائے گا، کسی کو بھی قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دے سکتے۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...