انڈونیشیا میں تین برطانوی منشیات فروشوں کو سزائے موت

انڈونیشیا میں تین برطانوی منشیات فروشوں کو سزائے موت
انڈونیشیا میں تین برطانوی منشیات فروشوں کو سزائے موت

  

لندن (بیورورپورٹ) انڈونیشیا کی عدالت نے منشیات کی سمگلنگ کے مقدمے میں چار برطانوی باشندوں کو سزائے موت کا حکم سنا دیا ہے جس پر آئندہ چند یوم میں عمل درآمد کر دیا جائیگا۔ انڈونیشین قانون کے مطابق سزائے موت پر عمل درآمد ‘ فائرنگ سکواڈ کرتا ہے۔ ویسٹ یارک شائر کے علاقے ویک فیلڈ کے ایک 33سالہ نوجوان گیرتھ کشمور کو ایک سال قبل انڈونیشیا کے جج نے عمر قید کی سزا کا حکم سنایا اس نوجوان نے اس فیصلہ کیخلاف اپیل کی تو دوسرے جج نے عمر قید کی سزا کو تبدیل کرتے ہوئے اسے سزائے موت کا حکم سنا دیا ۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ انڈونیشیا میں پانچ گرام سے زائد منشیات برآمد ہونے پر موت کی سزا دی جاتی ہے۔ ایک56سالہ برطانوی خاتون سینڈی فورڈ جسے بالی ائیر پورٹ سے 2012ءمیں گرفتار کیا گیا اسکے قبضہ سے 4.7کلو گرام کوکین برآمد ہوئی تھی ، کوسزائے موت کا حکم سنایا گیا ہے ایک اور برطانوی نوجوان جولین پاﺅنڈ ‘ راچل ڈوگیل کو بھی منشیات برآمد ہونے پر سزائے موت کا حکم سنایا گیا ہے ۔

مزید :

جرم و انصاف -